سانحہ علمدار روڈ کے شہداء کی پانچویں برسی، شہدا ء کو نہیں بھولیں گے، ایم ڈبلیو ایم کے سربراہ کا خصوصی خطاب

کیٹیگری پاکستان
Thursday, 11 January 2018


سانحہ علمدار روڈ کے شہداء کی پانچویں برسی، شہدا ء کو نہیں بھولیں گے، ایم ڈبلیو ایم کے سربراہ کا خصوصی خطاب
شیعیت نیوز:کوئٹہ میں ایم ڈبلیو ایم کی جانب سے سانحہ علمدار روڈ کے شہداء کی پانچویں برسی کے سلسلے میں "یوم استقامت و یکجہتی مظلومین" کے عنوان سے کانفرنس کا انعقاد کیا گیا۔ کانفرنس سے مجلس وحدت المسلمین کے سیکرٹری جنرل علامہ راجہ ناصر عباس جعفری، ڈپٹی سیکرٹری جنرل ناصر عباس شیرازی، ایم ڈبلیو ایم کے رکن بلوچستان اسمبلی سید محمد رضا، علامہ برکت علی مطہری اور علامہ ولایت حسین جعفری سمیت دیگر رہنماؤں نے خصوصی طور پر شرکت کی۔

 مجلس وحدت المسلمین کے سیکرٹری جنرل علامہ راجہ ناصر عباس جعفری نے کہا ہے کہ پاکستان ایشیاء کا دل ہے، اگر پاکستان غیر مستحکم ہوا تو پورا ایشیاء غیر محفوظ ہو جائے گا۔ اس وقت خطے میں پاکستان کو مرکزیت حاصل ہے۔ عالمی استکباری قوتوں کے مقابلے میں پاکستان کا طاقتور بننا اُن کے لئے حیران کن ہے۔ علامہ راجہ ناصر عباس جعفری کا کہنا تھا کہ امریکی صدر ٹرمپ نے اپنی پالیسی میں چین کی ترقی کو اپنے لئے خطرہ قرار دیا ہے۔ پاکستان کو شیعہ سنی نے مل کر بنایا ہے۔ قیام پاکستان میں کوئی مسلکی تقسیم نہیں تھی۔ لیکن آج ہمیں تقسیم کرنے کی سازشیں کی جا رہی ہیں۔ ان سازشوں میں ہمارے نااہل حکمران شریک ہیں۔ عالمی قوتیں پاکستان کو توڑنے کے لئے شیعہ سنی کو لڑانا چاہتی ہیں۔ اس وقت یورپ کو پاکستان سے شدید خطرات لاحق ہیں۔ امریکہ شام اور عراق کو توڑنے کے بعد پاکستان کو توڑنے کے خواب دیکھ رہا ہے۔ کوئٹہ کے شہداء نے پوری دنیا کو استقامت کا درس دیا ہے۔ شہیدوں کا خون اثر رکھتا ہے۔ پاکستان کی تاریخ میں پہلی مرتبہ 772 مقامات پر احتجاجی دھرنے دیئے گئے۔ پاکستان کے علاوہ یورپ میں لاکھوں لوگوں نے احتجاج کیا اور یہ صرف آپ کے شہداء کے خون کی پاکیزگی کے سبب تھا۔ آج ملک میں تکفیری منہ چھپاتے پھر رہے ہیں۔ آپ کی وجہ سے دنیا کے سامنے تکفیریت بے نقاب ہوئی ہے۔ آپ کی آواز میں طاقت ہے، آپ دنیا کے مظلومین کے لئے مثال ہیں۔ آپ وطن میں بیداری کے مرکز و محور ہیں۔ اس ملک میں بحران پیدا کئے جا رہے ہیں۔ ہمیں اندرونی اور بیرونی بحرانوں کا سامنا ہے۔ اس ملک میں ایک اور مجیب الرحمن کی شکل میں نواز شریف پیدا ہوچکا ہے۔

ایم ڈبلیو ایم کے رہنماء علامہ راجہ ناصر عباس جعفری کا مزید کہنا تھا کہ ہمارے شہداء کا خون عدلیہ کے ججوں سے سوال کرتا ہے کہ ہمارے قاتلوں کو مقام عبرت کیوں نہیں بنایا گیا۔؟ اُنہیں سزائیں کیوں نہیں دی گئیں۔؟ اس ملک کو ہمارے آباؤ اجداد نے بنایا تھا اور ہم نے اس کی حفاظت کرنی ہے۔ پاکستان کو دہشتگردی کے بلاک سے نکلنا ہے۔ اگر پاکستان امریکی بلاک میں نہ گیا ہوتا آج ملک کی یہ صورتحال نہ ہوتی۔ اس وقت ملک میں متحرک ڈپلومیسی کی ضرورت ہے۔ ملک کو قابل اور فہم و ادراک رکھنے والے وزیر خارجہ کی ضرورت ہے۔ شام میں کامیابی کے پیچھے وہاں کی یکجہتی ہے۔ وہاں عوام، فوج اور حکومت ایک پیج پر تھی۔ عراق میں مرجعیت، عوام اور فوج ایک صف پر تھیں، لیکن پاکستان میں یہ یکسوئی نظر نہیں آ رہی۔ اس وقت تمام ریاستی اداروں کو ایک پیج پر متحد ہوکر کام کرنے کی ضرورت ہے۔ پاکستان، چین، روس، ترکی اور ایران کو اکٹھا ہونا چاہیئے، جس کے بعد امریکی مداخلت افغانستان میں کم ہوجائے گی۔ ملک کے اندر تیزی کے ساتھ تبدیلیوں کی ضرورت ہے۔ تمام ریاستی اداروں کو ایک پیج پر آنے کی ضرورت ہے۔ اس میں جتنی تاخیر ہوگی، ملک کے لئے نقصان دہ ہے۔ ہمارا مطالبہ ہے کہ شہداء کے قاتلوں کو کیفر کردار تک پہنچایا جائے، ہمارے مسنگ پرسنز کو رہا کیا جائے، کیونکہ ہمارے لاپتہ افراد بے گناہ ہیں۔ ان کے خاندان کرب کی حالت میں ہیں۔ ہم ریاست پاکستان سے مطالبہ کرتے ہیں کہ اگر ان کا کوئی جُرم ہے تو عدالتوں میں پیش کیا جائے، ورنہ انہیں رہا کیا جائے۔

پڑھا گیا 169 دفعہ

Leave a comment

شیعہ نسل کشی رپورٹ

Shia Genocide 2016

حلب میں داعش کو شکست

حلب شام میں داعش کو شکست فاش کی لمحہ بہ لمحہ خبریں

اسلام و پاکستان دشمن مفتی نعیم

Mufti Naeem

مقالہ جات

ریاست کے اندر ریاست یا ڈیپ اسٹیٹ کیا ہے ؟

ریاست کے اندر ریاست یا ڈیپ اسٹیٹ کیا ہے ؟

سیاست اور سماجیات دونوں سے تعلق رکھنے والی ایک ایسی اصطلاح ہے جوریاست پر غیر منتخب انتظامی کنٹرول کو بیان کرنے کے لئے استعمال کیا جاتا ہے ۔یہ ایک ایسا...

Follow

Facebook

ڈیلی موشن

سوشل میڈیا لنکس

ہم سے رابطہ

ایمیل: This email address is being protected from spambots. You need JavaScript enabled to view it.

ویبسائٹ http://www.shiitenews.org