کاپی رائٹ کی وجہ سے آپ یہ مواد کاپی نہیں کر سکتے۔
ایران

قم المقدس میں ’’بحرینی شہداء کے اعزاز اور صدی کی ڈیل معاملے کی موت‘‘کے عنوان سے سمینار

شیعت نیوز : قم المقدس میں بحرین کی اسلامی تحریک کے سربراہ آیت اللہ شیخ عیسی قاسم اور 60 ممالک کے جوانوں کی شرکت سے ” شباب المقاومہ ” سمینار منعقد ہوا۔

رپورٹ کے مطابق قم المقدس میں عالمی شباب المقاومۃ محاذ کی طرف سے ” بحرینی شہداء کے اعزاز اور صدی کی ڈیل معاملے کی موت ” کے عنوان سے سمینار منعقد ہوا ۔

مرجع تقلید آیت اللہ العظمی مکارم شیرازی نے اس سمینار کے نام اپنے پیغام میں مسئلہ فلسطین اور بیت المقدس کے بارے میں امریکہ اور غدار عرب حکمرانوں کی مشترکہ گھناؤنی سازش اور صدی معاملے کی مذمت کرتے ہوئے کہا کہ امت مسلمہ کسی کو مسلمانوں کے قبلہ اول ” بیت المقدس ” کو فروخت کرنے کی اجازت نہیں دے گی۔

یہ خبر بھی لازمی پڑھیں :فلسطینی قوم سینچری ڈیل ناکام بنانے کے لیے تمام وسائل بروئے کار لائیں گے: حماس رہنما

آیت اللہ العظمی ناصر مکارم شیرازی نے اپنے پیغام میں امت مسلمہ کو درپیش چیلنجوں کی طرف اشارہ کرتے ہوئے کہا کہ امت مسلمہ نے ماضی میں بھی اسلام اور مقدسات اسلام کے دفاع میں قربانیاں دیں اور اب بھی وہ بیت المقدس کے دفاع میں کسی قسم کی قربانی سے دریغ نہیں کرےگی۔

آیت اللہ العظمی ناصر مکارم شیرازی نے اپنے پیغام میں کہا کہ اسرائیل کی لبنان اورغزہ کی لڑائیوں میں مسلسل شکست کے بعد امریکہ نے مسئلہ فلسطین کو محو اور نابود کرنے کی سازش تیار کی اور امریکہ اپنی اس سازش کو عملی جامہ پہنانے کے لئے سعودی عرب، بحرین اور متحدہ عرب امارات کو استعمال کر رہا ہے۔

ایران کی وزارت خارجہ کے ترجمان سید عباس موسوی نے ہفتے وار پریس کانفرنس میں ملکی و غیر ملکی نامہ نگاروں سے گفتگو میں سینچری ڈیل سازشی منصوبے کے بارے میں منامہ کانفرنس سے متعلق ایک بیان میں کہا ہے کہ ایسی کانفرنس جو عالم اسلام میں پھوٹ اور تفرقہ، فلسطینی امنگوں سے چشم پوشی، فلسطینی عوام کے حقوق اور بیت المقدس کے سودے کا باعث بن رہی ہو، شرمناک ہے۔

بحرین کانفرنس کی ایران سمیت دنیا کے مختلف ملکوں نے مخالفت کی ہے اور عراق، لبنان اور فلسطین جیسے ملکوں نے اس میں شرکت سے انکار کر دیا ہے۔

خود بحرین کے عوام نے بھی منامہ کانفرنس کی سخت مخالفت کی ہے۔ بحرینی عوام نے ملک کے مختلف شہروں میں احتجاجی مظاہروں میں شرکت کر کے منامہ کانفرنس اور صدی کی ڈیل کو فلسطینیوں سے غداری قرار دیا ہے۔

سینچری ڈیل کے مطابق بیت المقدس صیہونی حکومت کے حوالے کر دیا جائے گا، فلسطینی پناہ گزینوں کو اپنے وطن واپس لوٹنے کا حق نہیں ہو گا اور صرف غزہ اور غرب اردن کے محدود علاقوں پر ہی فلسطینیوں کا اختیار ہو گا۔

واضح رہے کہ بحرین کے دارالحکومت منامہ میں آج 25 جون سے امریکا اور اسرائیل کے سازشی منصوبےصدی کی ڈیل کے دائرے میں دو روزہ اقتصادی اجلاس شروع ہو رہا ہے۔

ٹیگز
Show More

متعلقہ مضامین

Back to top button
Close