دنیا

ملائیشیا کے وزیراعظم مہاتیر محمد نے اقتدار منتقل کرنے کا اعلان کردیا

شیعت نیوز: ملائیشیا کے وزیراعظم ڈاکٹر مہاتیر محمد نے مستعفی ہونے کا اعلان کرتے ہوئے کہا ہے کہ وہ نومبر 2020 کے بعد عہدہ چھوڑ دیں گے۔

ملائیشیا میں حکمراں اتحادی جماعت ’پاکاتان ہاراپان‘ کی صدارتی کونسل میں 21 فروری کو ہونے والے اہم اجلاس میں ملک میں اقتدار کے تبادلے کے حوالے سے غور و خوص کیا جائے گا۔

یہ بھی پڑھیں : ملائیشیا ایران کیخلاف غیرقانونی امریکی پابندیوں کی قطعاًحمایت نہیں کرتا، مہاتیرمحمد

عالمی خبر رساں ادارے کے مطابق ملائیشیا کے وزیراعظم مہاتیر محمد کا کہنا ہے کہ اتحادی جماعتوں کی صدارتی کونسل میں اقتدار کے تبادلے کے حوالے سے جو بھی فیصلہ ہو، وہ نومبر میں اہم ترین ایشیا پیسیفک اکنامک کارپوریشن سمٹ سے پہلے کسی صورت مستعفی نہیں ہوں گے۔

ملائیشین وزیراعظم کا کہنا تھا کہ ’میں نے یہ فیصلہ عوامی انصاف پارٹی کے چیئرمین انور ابرہیم سے مشاورت کے بعد کیا، عہدہ ترک کرنے کا خیال بہت پہلے سے میرے دماغ میں ہے تاکہ سیاسی جماعتیں آگے آئیں اور ملک کے لیے اپنا کردار ادا کریں‘۔

مہاتیر محمد کا کہنا تھا کہ عہدہ ترک کرنے کا میرا یہ فیصلہ پرانا ہے جس کا ماضی میں تذکرہ کر چکا ہوں ، مخلوط حکومت میں شامل سیاسی جماعتیں اپنے تیئں جو بھی فیصلہ کریں مگر میں اپیک اجلاس کے بعد ہی مستعفی ہوں گا۔

یہ بھی پڑھیں : امریکی منشاءکے خلاف پاکستان کی ملائیشیا اور ترکی سے قربت ، سعودی عرب میں پاکستانیوں پر قیامت ٹوٹ پڑی

سابق وزیراعظم نجیب رزاق کو شکست دینے کیلیے بنائے گئے انتخابی اتحاد نے فیصلہ کیا تھا کہ کامیابی کی صورت میں وزیراعظم کے عہدے پرآدھی مدت کیلئے مہاتیر محمد اور پھر بقیہ مدت کیلئے انور ابراہیم کو وزیراعظم بنایا جائے گا۔

انور ابراہیم انتخابات کے موقع پر جیل میں اسیر تھے اس لیے پہلے مہاتیر محمد کو یہ عہدہ دیا گیا جب کہ ڈپٹی وزیراعظم کا عہدہ انور ابراہیم کی اہلیہ کو دیا گیا۔

ٹیگز
Show More

متعلقہ مضامین

Back to top button
Close