ایران

مشترکہ ایٹمی معاہدہ نہ مقدس ہے نہ لعنتی، بلکہ ایک بین الاقوامی قرارداد ہے

شیعت نیوز:اسلامی جمہوریہ ایران کے صدر حجۃ الاسلام والمسلمین حسن روحانی نے تہران میں فرہنگیان یونیورسٹی میں یوم طلباء کی مناسبت سے ایک تقریب سے خطاب کرتے ہوئے کہا ہے کہ مشترکہ ایٹمی معاہدہ نہ مقدس ہے نہ لعنتی، بلکہ ایک بین الاقوامی قرارداد ہے اور ہمیں اس کے فوائد سے استفادہ کرنے کی کوشش کرنی چاہیے۔

صدر روحانی نے کہا کہ پیغمبر اسلام صلی اللہ علیہ و آلہ وسلم نے بھی بنی قریظہ کے یہودیوں سے معاہدہ کیا تھا لیکن یہودیوں نے اس معاہدے کو توڑ دیا ، پیغمبر اسلام (ص) نے کفار کے ساتھ عہد باندھا اور کفار نے عہد توڑ دیا اور پیغمبر اسلام نے ان کے سامنے استقامت کا مظاہرہ کیا۔

صدر روحانی نے کہا کہ ہمیں تمام شرائط میں اپنے مفادات کا خیال رکھنا چاہیے اور ملکی و قومی مفادات کے تحفظ میں اپنی تمام ظرفیتوں سے استفادہ کرنا چاہیے۔

صدر نے کہا کہ آئندہ سال کا بجٹ مذاکرات پر مبنی نہیں ہے بلکہ آئندہ سال کے بجٹ کو اقتصادی پابندیوں کو دیکھتے ہوئے مرتب کیا گیا ہے۔ اور مشکلات کو دور کرنا ہماری قانونی اور انقلابی ذمہ داری ہے۔

صدر حسن روحانی نے آنے والے پارلیمانی انتخابات کی طرف اشارہ کرتے ہوئے کہا کہ عوام کی ذمہ داری ہے کہ وہ بہتر اور لائق افراد کو منتخب کرکے پارلیمنٹ میں بھیجیں اور انتخابات میں بھر پور شرکت کریں۔

صدر روحانی نے کہا کہ مشترکہ ایٹمی معاہدے سے امریکہ کے خارج ہونے اور امریکی حکام کی مشترکہ ایٹمی معاہدے پر برہمی سے صاف ظاہر ہوتا ہے کہ مشترکہ ایٹمی معاہدہ ایران کے مفاد میں تھا ۔ ایران کے مفاد کو نقصان پہنچانے کی غرض سے امریکہ مشترکہ ایٹمی معاہدے سے خارج ہوگیا۔ صدر روحانی نے کہا کہ مشترکہ ایٹمی معاہدے سے خارج ہوکر امریکہ نے اپنا عالمی اعتبار کھو دیا ہے۔

ٹیگز
Show More

متعلقہ مضامین

Back to top button
Close