عراق

حضرت علی علیہ السلام کے روضہ اطہر کی خوبصورتی میں اضافہ

shiite_najaf-300x195خانوادہ اہلبیت کے دلدادہ ایرانی مسلمان عوام کی دن رات کی محنت اور مالی معاونت سے نجف اشرف میں واقع مولائے کائنات حضرت علی علیہ السلام کے روضہ اطہر کی خوبصورتی میں اضافہ مقامات مقدسہ کی تعمیر اور توسیع کا ایک ایسا نمونہ ہے کہ جو اپنی مثال آپ ہے اور اہلبیت علیہم السلام سے ایرانی عوام کے والہانہ عشق کا منہ بولتا ثبوت ہے ۔اطلاعات کے مطابق ایرانی ماہرین نے امیرالمومنین حضرت علی علیہ السلام کے روضہ اطہر میں ایوان طلاکی تعمیر نو مکمل کرلی ہے۔  عراق کے مقدس  مقامات کی تعمیر نو کےایرانی ادارے نےکہا ہے کہ مولائے کائنات علیہ السلام  کے روضہ اطہر کا ایوان طلا وقت گذرنے کےساتھ ساتھ فرسودہ ہوگياتھا اورعراق کے سابق خونخوار اور سفاک ڈکٹیٹرصدام کے زمانے میں بھی صدامی فوج نے اس مقدس مقام کو نقصان پہنچایا تھا۔ ایرانی انجینیروں اور ماہرین نے عراق میں ائمہ طاہرین علیھم السلام کے روضہ ہاے اطہر کی تعمیر نو کے متعدد پروجیکٹ انجام دئےہیں۔ عراق میں رسول اللہ صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم کے خاندان کی متعدد عظیم ہستیاں ہیں جن کی زیارت کرنے کےلئے ساری دنیا سے لاکھوں افراد آتےہیں ۔اس سے قبل نواسۂ رسول حضرت امام حسین علیہ السلام کے مقام شہادت (قتل گاہ) پر نصب کرنے کےلئے ایران کے شہر اصفہان میں تیار کی جانے والی مبارک کا خرچہ مخیر حضرات کے علاوہ صادرات بینک کے کارکنوں نے برداشت کیا ہے ۔900 کلوگرام وزنی اس ضریح کو سید الشہداء حضرت امام حسین علیہ السلام کے القابات قرانی آیات اور احادیث نبوی سے مزین کیا گیا ہے ۔ضریح مبارک کی تیاری میں 325 کلوگرام چاندی اور پانچ سو کلوگرام سونے کے علاوہ دیگر دھاتیں استعمال کی گئی ہیں۔دریں اثنا  اسلامی جمہوریہ ایران کے صوبہ خوزستان کے عوام نے کربلا میں حضرت امام حسین علیہ السلام اورحضرت ابو الفضل العباس علیہ السلام کے روضہ ہائے اقدس کے لئے ایک ارب تومان ( تقریبا دس لاکھ ڈالر )کا ھدیہ پیش کیا ہے ۔ ہمارے نمائندے کی رپورٹ کے مطا بق خوزستان کے ایک عھدیدار نے بتایا کہ اس صوبے کے عوام نے نقد رقم کے علاوہ  بارہ کلو سونا حضرت امام حسین علیہ السلام اور حضرت ابولفضل العباس کے روضوں کی تعمیر کے لئے پیش کئےہیں ۔

متعلقہ مضامین

Back to top button
Close