پاکستان

کوئٹہ: دفاعِ فلسطین دفاع ِپاکستان ہے،اسرائیل پاکستان کو تباہ کرنا چاہتا ہے۔

hamas_leader_Osama-Hamdanفاعِ فلسطین دفاع ِپاکستان ہے،اسرائیل پاکستان کو تباہ کرنا چاہتا ہے،معۃ الوداع کو تمام سیاسی و مذہبی جماعتیں یو م القدس منائیں گی،مشترکہ پروگرام منعقد کیا جائے گا،امریکا دنیا کا سب سے بڑا دہشت گرد ہے ،پوری دنیا امریکی اور اسرائیلی عزائم کو خاک میں ملانے اور اپنے بقاء کے لئے متحد ہو جائے،مسئلہ فلسطین کا حل صرف اور صرف اسرائیل کی نابودی ہے نہ کہ دو ریاستیں۔ان خیالات کا اظہار اسلامہ تحریک مزاحمت حماس کے مرکزی رہنما ڈاکٹر اسامہ حمدان اور بلوچستان کے صوبائی رہنماؤں ارباب ہاشم کاسی (صوبائی صدرپاکستان مسلم لیگ قائد اعظم)،نواب محمد خان  شاہوانی(چیف آف بیرک)،امان اللہ شاد زئی(صوبائی نائب امیر جماعت اسلامی)،حاجی شفیق دولت زئی(صوبائی صدرجمعیت علمائے اسلام سمیع الحق)،میر قدوس ساسولی(صوبائی صدر جمعیت علمائے پاکستان بلوچستان)،عبد الحق ہاشمی(سابق صوبائی امیر جماعت اسلامی بلوچستان)،قاسم سوری(صوبائی صدر پاکستان تحریک انصاف)،علامہ مقصود ڈومکی (صوبائی رہنما مجلس وحدت مسلمین پاکستان)،علامہ قاضی احمد نورانی صدیقی (مرکزی رہنماجمعیت علمائے پاکستان و فلسطین فاؤنڈیشن پاکستان)،علامہ سید ہاشم موسوی(مذہبی اسکالر)،علامہ جمعہ اسدی (معروف عالم دین)،صابر کربلائی (مرکزی ترجمان فلسطین فاؤنڈیشن پاکستان)،اور عامر عباس طوری (ترجمان فلسطین فاؤنڈیشن پاکستان ،بلوچستان)نے فلسطین فاؤنڈیشن پاکستان کوئٹہ کے زیر اہتمام کوئٹہ پریس کلب میں منعقد ہ بین الاقوامی فلسطین کانفرنس بعنوان”محصور اہل فلسطین اور ان کی پکار”سے خطاب کرتے ہوئے کیا۔
اسلامی تحریک مزاحمت حماس کے مرکزی رہنما ڈاکٹر اسامہ حمدان نے ٹیلی فونک خطاب کرتے ہوئے کہا کہ ہم ا نشاء اللہ الاقصیٰ اور القدس کو یہودی تسلط سے آزاد کروائیں گے،ان کا کہنا تھا کہ ڈیڑھ ملین سے زیادہ آپکے بھائی اس وقت بھی غزہ میں محصور ہیںاور دنیا کی نام نہاد طاقتیں جو انسانی حقوق کا دم بھرتی ہیں لاکھوں نہتے عوام کی موت کا نظارہ دیکھنے میں مصروف عمل ہیں،انہوں نے کہا کہ فلسطینیوں کے خلاف جنگ کا مطلب دنیا کے ڈیرھ ارب مسلمانوں سے جنگ ہے ،لہٰذااپنے اتحاد کے ذریعے اسرائیل پر واضح کر دیں کہ انکی جنگ بے معنیٰ ہے وہ یہ جنگ کبھی نہیں جیت سکتے اور مسلمان اور فلسطینی ہی آخر کار اس جنگ میں سرخرو اور فاتح ہونگے انشااللہ۔
ڈاکٹر اسامہ حمدان کا کہنا تھا کہ اگر آپ فلسطین کا دفاع کریں گے تو یہ در اصل پاکستان کا دفاع ہوگا کیونکہ ا سرائیل یہ سمجھتا ہے کہ وہ اس وقت تک فلسطین پر اپنا مکمل تسلط قائم نہیں کرسکتا جب تک اسلامی دنیا کو مکمل طور سے تباہ نہ کر دے خصوصا ًپاکستان کو کیونکہ اسرائیل پاکستان کو اہم اسلامی مملکت سمجھتا ہے ایک ایٹمی طاقت جو کہ فلسطینیوںکہ لیے انتہائی مدد گار ثابت ہوسکتی ہے لہٰذا دفاع فلسطین کا مطلب دفاع پاکستان ہے میں آپکی کانفرنس اور کاوشوں کی کامیابی کے لیے پُر امید ہوں۔انشااللہ۔
کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے صوبائی صدر پاکستان مسلم لیگ قائد اعظم ارباب ہاشم کاسی کا کہنا تھا کہ مسلمان حکمران بے حس ہو چکے ہیں جس کی وجہ سے علام کفر عالم اسلام کو پسپا کرنے کی کوشش میں مصروف ہے،جمعیت علمائے اسلام کے صوبائی رہنما حاجی شفیق دولت زئی نے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ اب وقت آ گیاہے کہ پاکستان کے تمام طبقات بشمول سیاسی و مذہبی جماعتیں اور سول سوسائٹی سمیت طلباء برادری عالمی استعمار امریکا اور اسرائیل کے خلاف متحد ہو جائے اور پاکستان میں اسرائیلی اور امریکی سازشوںکو ناکام بنا دے،ا س موقع پر جماعت اسلامی کے صوبائی نائب امیرامان اللہ شادزئی نے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ دنیا بھر کے حکمران امریکی کاسہ لیسی میں مصروف عمل ہیں اور اسرائیل امریکی لے پالک بچہ ہے جس کا وجود کسی طور پر قابل قبول نہیں ہے ان کاکہنا تھا کہ اگرحکومت پاکستان نے کسی بھی وقت غاصب ریاست اسرائیل کو قبول کرنے کے حوالے سے نرم گوشہ پیدا کیا تو وہ وقت حکومت پاکستان کے زوال کا وقت ہو گا اور ملک بھر میں گلی کوچوں میں حکومت مخالف تحریک شروع کر دی جائے گی ،انہوں نے فلسطین فاؤنڈیشن پاکستان کے کوئٹہ میں قیام کو خوش آئیند قرار دیا اور کہا کہ فلسطین فاؤنڈیشن پاکستان کے ساتھ مل کر جد جہد فلسطین میں قدم بہ قدم ساتھ دیں گے اور مظلوم فلسطینوں سے اظہار یکجہتی کرتے رہیں گے۔
PLF_Balochistanبین الاقوامی فلسطین کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے مجلس وحدت مسلمین پاکستان کے رہنما علامہ مقصود ڈومکی کا کہنا تھا کہ دنیا بھر کے تمام مسلمان حدیث پیغمبر ؐ کی روشنی میں ایک جسم کی مانند ہیں اور جسم کے ایک حصہ میں تکلیف پورا جسم محسوس کرتا ہے ،ان کاکہنا تھا کہ فلسطینی ہمارے جسم کا ٹکڑا ہیں اور ہم کسی بھی صورت میں فلسطن کاز کی حمایت اور امریکا کی مخالفت سے پیچھے نہیں ہٹیں گے اس موقع پر انہوں نے تمام سیاسی و مذہبی جماعتوںکے رہنماؤں سے اپیل کی جمعۃ الوداع کو یوم القدس منائیں اور فلسطینی عوام سے اپنا اظہار یکجہتی متحد ہو کر وضع کریں کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے جمعیت علمائے پاکستان کے مرکزی رہنما اور فلسطین فاؤنڈیشن پاکستان کے مرکزی رہنما علامہ قاضی احمد نوارنی کا کہنا تھا کہ اسرائیلی ناپاک عزائم صرف اور صرف فلسطین پر قابض رہنے تک محدود نہیں ہیں بلکہ غاصب صہیونی ریاست اسرائیل دنیا بھر کی اسلامی ریاستوںکو اپنے ناپاک عزائم کا نشانہ بنانا چاہتی ہے جبکہ پاکستان کو تباہ و برباد کرنے کا ایجنڈا بھی اسرائیلی ایجنڈا ہے جس کو پاکستان کے عوام اپنے اتحاد
اور یکجہتی سے ناکام بنا دیں گے اور فلسطینی عوام سے ہمیشہ اپنی اخلاقی و سیاسی وابستگی کو ختم نہیں کریں گے،کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے پاکستان تحریک انصاف کے صوبائی صدر قاسم سوری کا کہنا تھا مسئلہ فلسطین کے حل کے مشترکہ اور متحد جد وجہد کی ضرورت ہے،اور ہم فلسطین فاؤنڈیشن پاکستان کے ساتھ ہیں اور فلسطین عوام کی جس حد تک مدد ممکن ہو گی کرتے رہیں گے اور عالمی طاقتوں امریکا،برطانیہ اور اسرائیل سے اپنی نفرت کا اظہار کرتے رہیں گے،اس موقع پرمعروف اسکالر علامہ سید ہاشم موسوی،معروف عالم دین علامہ جمہ اسدی ،فلسطین فاؤنڈیشن پاکستان کے مرکزی ترجمان صابر کربلائی،اور صوبائی ترجمان بلوچستان عامر عباس طوری نے کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ پوری امت مسلمہ کو چاہئیے کہ قبلہ اول مسجد الاقصیٰ اور بیت المقدس کی آزادی کے لئے عملی جد وجہد کا آغاز کرے ،انکاکہنا تھا کہ ہم اس عزم کا اظہار کرتے ہیں کہ دنیا بھر اور بلخصوص پاکستان کی سرزمین پر مسئلہ فلسطین کو اجاگرکرنے اور فلسطینی مظلومین سے اظہار یکجہتی کے لئے کوشاں رہیں گے ،کانفرنس میں مختلف طبقات سے تعلق رکھنے والے نامور دانشور،زعمائ،صحافی برادی ،اور طلباء برادری میں قمر عباس (صدر کوئٹہ آئی ایس او)،نور الدین (ناظم اسلامی جمعیت طلبہ)،داد شاہ اچکزئی (مسلم اسٹوڈنٹس فیڈریشن نواز)،حمید منصوری (ناظم جمعیت طلبہ عربیہ بلوچستان)،مولانا عارف ڈمڑ،دولت خان اور دیگر بھی شریک تھے ۔

Show More

متعلقہ مضامین

Back to top button
Close