مقالہ جات

مومنین و مومنات سے فقط ایک التجا ، ایک درخواست یا ایک گزارش

مومینن اس طرف متوجہ ہوں جس طرح آپ لوگ بکرا عید (عید الضحی) مناتے ہے، جس طرح عید الفطر مناتے ہے ،جس طرح اور دوسرے تہوار اور عیدیں مناتے ہے تو کیا ،آپ عید غدیر اس طرح نہیں منا سکتے؟ جیسے ہم کسی عزیز کی شادی پر آفس کی چھٹی لے سکتے ہیں تو کیا غدیر کے دن ہم ایسا کرکے اس دن کو اپنے گھروالوں اور مومینن کے ساتھ نہیں منا سکتے ؟ کیا اس دن نیا لباس زیب تن نہیں کر سکتے ؟ کیا فیملی کے ساتھ پکنک نہیں کر سکتے ؟ کیا اچھے اچھے پکوان تیار کر کے نیاز نہیں کروا سکتے ؟ بچو کو تحفے تحائف یا عیدی نہیں دے سکتے ؟

ہم یہ سب کرسکتے ہیں، لیکن کب جب ہمیں غدیر کی اہمیت کا اندازرہ ہوگا، ہم عید اور بکرا عید کی اہمیت جانتے ہیں کیوں کے اس بارے میں ہمیں اللہ اور اسکے نبی نے واضح الفاظ میں بتایا ہے، اسی طرح غدیر کے بارے میں بھی یہ حکم ہے لیکن غدیر کے دشمنوں نے اس دن کو چھپا دیا یہی وجہہ ہے کہ آج تک غدیر کا اعلان تنہا ہے اور غدیر کا وارث غیبت میں ہے۔
غدیر ہے کیا غدیر دین مبین اسلام کے مکمل ہونے کا دن ہے، غدیر امامت و ولایت کے آغاز کا دن ہے یہ وہ دن ہے جس دن اللہ ہم سے راضی ہوا گویا یہ وہ دن تھا جس دن اگر رسالت اعلان ولایت نہیں کرتی تو گویا کار رسالت ختم ہوجاتی۔ اس دن کو معصومینن نے فقط مومینن کی عید قرار دیا ہے، جو شخص بھی حب اہلیبت رکھتا ہے اور ولایت علی کا دعویدار ہے وہ اس دن خوش ہوتا ہے اور اسکا اظہار کرتا ہے۔
لیکن کیا یہ انصاف ہے کہ مومنین اتنا بڑا دن ، فقط موبائل میسیجز تک محدود رکھیں، افسوس صد افسوس ، ، اس دن کو بھی فقط شادی کے لئے مخصوص کردیا گیا ہے، کیا کبھی کسی نے بکرا عید اور عید الفطر کے روز شادی نہیں تو کیوں؟؟
عجیب صورت حال بن گی ہے ،ہم اپنے ماضی کو آہستہ آہستہ بھول رہے ہے براے مہربانی ،کچھ توجہ دیجیے فقط رسمی نہ بنے رہیں ، کچھ عملی بھی بنے ۔ روز اعلان ولایت امیرالمومینن علی ابن ابی طالب کو شایاں شان طریقے سے منایا جائے یہ وہ دور آگیا ہے کہ ہم ولایت امیرالمومین سے تجدید عہد کریں کے مولا جیسے غدیر کے بعد مسلمانوں نے آپکو تنہا چھوڑا تھا ہم وقت کے علی یعنی امام زمانہ کو تہنا نہیں چھوڑیں گے۔ لہذ عید غدیر روز تجدید عہد کے طور پر منائیں اپنے گھروں میں خصوصی اہتمام کرین اپنے بچوں کو اس دن کی تاریخ اور اہمیت یاد دلایں کیونکہ اگر آج ہم نے ایسا کیا تو کل ہماری نسل علی زمان کی فوج بنے گی ۔ درخواست ہے ، اس سال بھرپور طریقے سے عید غدیر منائیں۔

ٹیگز
Show More

متعلقہ مضامین

یہ بھی ملاحظہ کریں

Close
Back to top button
Close