مشرق وسطی

کوبانی کے دفاع کے لیے تازہ دم کرد فوجی دستوں کی آمد

شیعیت نیوز{مانیٹرنگ ڈسیک}عراق کے نیم خود مختار صوبہ کردستان کی البیشمرکہ فوج کا 150 فوجیوں پر مشتمل تازہ دم دستہ ترکی کے راستے شام کے کرد اکثریتی سرحدی شہر کوبانی پہنچ گیا ہے۔ البیشمرکہ کے ذرائع کے مطابق کوبانی میں ایک ماہ قبل کرد فوجیوں کا ایک دستہ دہشت گرد’’داعش‘‘ کے خلاف لڑائی کے لیے بھیجا گیا تھا۔ تازہ دم دستہ پہلے فوجیوں کی جگہ لے گا اور پہلے سے موجود فوجیوں کو واپس بلالیا گیا ہے۔
خیال رہے البیشمرکہ فوجیوں نے نومبر کے اوائل میں کوبانی کا دفاعی نظام سنبھالا تھا۔ اس کے بعد2دسمبر کو 150فوجیوں پر مشتمل تازہ دم دستہ بھی پہنچ گیا ہے۔
عراقی کرد فوج کی آمد پر شام میں کرد جنگجوئوں کو ایک نیا حوصلہ ملا اور انہوں نے علمی اتحادی فوج کی بمباری کے سائے میں داعش کی پیش قدمی روک دی تھی۔
یاد رہے کہ کوبانی کا علاقہ ترکی سے متصل ہے اور امریکا سمیت بعض دوسرے ممالک ترکی سے بھی کوبانی میں داعش کے خلاف جنگ کی قیادت کا مطالبہ کرتے رہے ہیں۔ تاہم ترک حکومت کا موقف ہے کہ عالمی برادری کو صرف داعش کے خلاف کارروائی کے بجائے شام میں صدر بشار الاسد کو اقتدار سےہٹانے کے لیے بھی کارروائی کرنی چاہیے۔

ٹیگز
Show More

متعلقہ مضامین

Back to top button
Close