عراق

داعش کی مدد پرامریکی کمانڈر سے وضاحت طلب

عراق کی مجلس اعلائے اسلامی کے سربراہ سیدعمارحکیم نے داعش کے لئے فراہم کی جانے والی امریکی امداد پر وضاحت طلب کی ہے۔
ارنا کی رپورٹ کے مطابق مجلس اعلائے اسلامی کے سربراہ نے عراق میں امریکی فوج کے کمانڈر جنرل لویڈ اوسٹن سے ملاقات کرکے داعش کے لئے امریکی ہتھیار گرائے جانے کی وضاحت طلب کی ہے۔ بغداد میں ہونے والی اس ملاقات میں لیبیا، یمن اور بحرین سمیت علاقے کے سیکورٹی مسائل کے بارے میں بھی گفتگو ہوئی۔ مجلس اعلائے اسلامی کے بیان کے مطابق اس ملاقات میں جنرل اوسٹن نے امریکی فوج اور داعش کے درمیان کسی بھی طرح کے رابطے اور اس کے لئے امریکی طیاروں سے امداد پہنچائے جانے کی خبر کو مسترد کردیا۔ امریکی جنرل نے دعوی کیا کہ داعش کے خاتمے کے علاوہ کوئی اور آپشن موجود نہيں ہے۔ واضح رہے کہ گذشتہ چند مہینوں اور ہفتوں کے دوران عراقی سیکورٹی ذرائع، داعش کے جنگی علاقوں میں امریکی ہیلی کاپٹروں کی لینڈنگ اور انھیں ہتھیار اور دوسرے جنگی ساز و سامان پہنچانے کی خبر دیتے رہے ہیں۔ رضاکار فورس اور عراقی فوج نے صوبہ الضلوعیہ کے علاقے میں دو مہینے پہلے ہونے والی جنگی کاروائیوں کے دوران اس طرح کے واقعے کی ویڈیو فیلم سوشل میڈیا پر اپ لوڈ کی تھی حتی بعض عراقی ٹی وی چینل اس سلسلے میں دستاویزی فیلم بھی دکھا چکے ہیں۔ دو ہفتے پہلے یہ مسئلہ اتنا طول پکڑ گیا کہ عراقی پارلیمنٹ نے اس سلسلے میں ایک تحقیقاتی کمیٹی تشکیل دی اور سیاسی جماعتوں نے حکومت سے اس مسئلے کا سختی سے جائزہ لینے کا مطالبہ کیا۔ دوسری جانب عراقی وزیر دفاع نے اپنے ایک بیان میں خبر دار کیا ہے کہ عراقی فضائی حدود میں داعش کے لئے امداد گرانے والے طیاروں اور ہیلی کاپٹروں کو نشانہ بنایا جائے گا۔

ٹیگز
Show More

متعلقہ مضامین

Back to top button
Close