کاپی رائٹ کی وجہ سے آپ یہ مواد کاپی نہیں کر سکتے۔
پاکستان

پاکستان کیلئے خطرے کی گھنٹی، داعش وہاں پہنچ گئی جس کا ڈر تھا

پاکستان میں داعش سے متعلق خدشات کا اظہار اکثر کیا جاتا ہے اور مغربی میڈیا کے مطابق اس شدت پسند تنظیم کا اثر و رسوخ شام اور عراق کے بعد اب افغانستان میں پاکستانی سرحد کے قریب پہنچ چکا ہے۔برطانوی جریدے’’میل آن لائن‘‘کے مطابق افغانستان کے سرحدی علاقوں میں تربیت میں مصروف درجن بھر جنگجوﺅں کی تصاویر سامنے آئی ہیں جو داعش کے جھنڈے لہراتے دیکھے گئے ہیں۔ ان تصاویر کے بارے میں خیال ظاہر کیا گیا ہے کہ یہ افغان صوبے لوگر کے استاد یاسر کیمپ میں تربیت لینے والے سابقہ طالبان جنگجوﺅں کی ہیں جو اب داعش کا اثر قبول کرچکے ہیں۔ تصاویر میں بھاری آرٹلری ہتھیار بھی نظر آتے ہیں جن میں مشین گنیں اور دیگر بھاری اسلحہ شامل ہے۔ امریکی ٹی وی ’’فوکس نیوز‘‘کے مطابق یہ کیمپ مبینہ طور پر طالبان سے علیحدہ ہونے والے گروپ سعد بن وقاص فرنٹ کے تحت چلایا جارہا ہے تاہم یہ واضح نہیں ہے کہ اس کے شام اور عراق میں موجود داعش کے رہنماﺅں سے کتنے قریبی تعلقات ہیں۔گلوبل انٹیلیجنس فرم Stratfor کے ماہر اسکاٹ سٹوورٹ کے مطابق تصاویر میں نظر آنے والے جنگجو بنیادی طور پر داعش کے افراد نہیں ہیں بلکہ یہ غالباً سابقہ طالبان ہیں جو القاعدہ کی بجائے داعش کے نظریہ کے ساتھ منسلک ہونا زیادہ موزوں سمجھتے ہیں۔واضح رہے کہ داعش پاکستان تک اپنا اثر و رسوخ پھیلانے کا عندیہ دے چکی ہے جبکہ پاکستانی سیکیورٹی ادارے اسے اپنی سرحدوں سے باہر رکھنے کے لئے جانفشانی سے کام کررہے ہیں اور تجزیہ کاروں کے مطابق تاحال اس تنظیم کو پاکستان میں گھسنے کا موقع نہیں مل سکا ہے۔

ٹیگز
Show More

متعلقہ مضامین

Back to top button
Close