ایران

پاسنگ آؤٹ پریڈ سےآیت اللہ العظمی سید علی خامنہ ای خطاب

رہبر انقلاب اسلامی نے فرمایا ہے کہ ایران اغیار کو فوجی مراکز کے معائنے کی اجازت نہیں دے گا-

رہبر انقلاب اسلامی اور ایران کی مسلح افواج کے کمانڈر انچیف آیت اللہ العظمی سید علی خامنہ ای نے بدھ کے روز امام حسین کیڈٹ یونیورسٹی کی پاسنگ آؤٹ پریڈ کے موقع پر فوجی جوانوں اور افسران سے خطاب کرتے ہوئے ایٹمی مذاکرات کے سلسلے میں اس بات پر زور دیا کہ مقابل فریق جوہری مذاکرات میں پھر نئی باتیں کر رہا ہے- رہبر انقلاب اسلامی نے فرمایا کہ م‏عائنوں کے بارے میں ہم نے کہا ہے کہ ہم اغیار کو کسی بھی فوجی مرکز کا معائنہ کرنے کی اجازت نہیں دیں گے- آپ نے فرمایا کہ وہ کہتے ہیں کہ ایٹمی سائنس دانوں کے ساتھ انٹرویو کی اجازت دی جائے اس کا مطلب یہ ہے کہ وہ ہمارے سائنس دانوں سے پوچھ گچھ اور تفتیش کرنا چاہتے ہیں۔ رہبر انقلاب اسلامی نے فرمایا کہ ہم اجازت نہیں دیں گے کہ ایٹمی اور کسی بھی اہم شعبے کے ماہرین اور سائنس دانوں سے وہ کسی بھی قسم کی پوچھ گچھ کریں- آپ نے دو ٹوک الفاظ میں فرمایا کہ میں ہرگز اس بات کی اجازت نہیں دوں گا کہ وہ آ کر سائنس و ٹیکنالوجی کو یہاں تک پہنچانے والے، ملت ایران کے پیارے بیٹوں اور سائنس دانوں سے کسی بھی طرح کی پوچھ گچھ کریں- آیت اللہ العظمی سید علی خامنہ ای نے فرمایا کہ اس میدان میں شجاعت و بہادری کے ساتھ مصروف عمل اسلامی جمہوریہ ایران کے حکام کی جانب سے اس طرف مسلسل توجہ دیئے جانے کی ضرورت ہے کہ بےشرم دشمن کے مقابلے کا واحد راستہ پختہ عزم اور کوئی بھی کمزوری نہ دکھانا ہے اور ایرانی مذاکرات کاروں کو انھیں ملت ایران کے پیغام اور عظمت سے باخبر کرنا ہوگا- رہبر انقلاب اسلامی نے فرمایا کہ دشمن، خلیج فارس کے علاقے کے بعض نادان حکام کے ساتھ مل کر نیابتی جنگ کو ایران کی سرحدوں تک پھیلانا چاہتا ہے- آپ نے پاسداران انقلاب اسلامی اور قومی اقتدار نیز ارضی سالمیت کا دفاع کرنے والی تمام قوتوں کے بیدار اور ہوشیار رہنے کی ضرورت پر زور دیا اور تاکید کے ساتھ فرمایا کہ اگر ایران کے خلاف کسی بھی قسم کی شیطنت کی گئی تو ایران کا ردعمل انتہائی سخت ہو گا-

ٹیگز
Show More

متعلقہ مضامین

Back to top button
Close