مقبوضہ فلسطین

غزہ جانے والی کشتی پر حملہ، بین الاقوامی قوانین کے برخلاف

حماس کے نائب سربراہ اسماعیل ہنیہ نے غزہ جانے والے تیسرے فلوٹیلا پر صیہونی افواج کے حملے کی مذمت کی ہے اور اسے بین الاقوامی قوانین کے برخلاف قرار دیا ہے۔
حماس کے نائب سربراہ اسماعیل ہنیہ نے فلوٹیلا میں موجود سیاسی، بین الاقوامی اور پارلیمانی شخصیات اور ذرائع ابلاغ کے نمائندوں کے اس دلیرانہ اقدام کا خیرمقدم کیا ہے۔ انہوں نے کہا کہ فلوٹیلا پر سوار افراد اپنا پیغام پہنچانے اور اپنے مقصد کے حصول میں کامیاب رہے۔ انہوں نے کہا کہ اس سفر سے ایک بار پھر عالمی برادری کے سامنے غزہ پٹی کے محاصرے کا معاملہ اجاگر ہوا ہے ۔ یاد رہے صیہونی افواج نے پیر کی صبح بین الاقوامی سمندر میں ماریان نام کے بحری جہاز پر حملہ کرکے اسے مقبوضہ فلسطین کے اشدود بندرگاہ جانے پر مجبور کردیا۔ یہ جہاز غزہ پر مسلط کردہ محاصرہ توڑنے اور فلسطینی عوام تک امداد رسانی کی غرض سے سوئیڈن سے روانہ ہوا تھا۔ اس سے قبل صیہونی حکومت نے مئی دو ہزار دس میں غزہ جانے والے مرمرہ نامی بحری پر حملہ کیا تھا۔ اس واقعے میں صیہوںی افواج نے دس سے زائد افراد کو ہلاک اور زخمی کردیا تھا۔ ہلاک ہونے والوں کا تعلق ترکی سے تھا۔

ٹیگز
Show More

متعلقہ مضامین

Back to top button
Close