پاکستان

مولانا فضل الرحمان منافقت اور دوغلی سیاست کے بے تاج بادشاہ ہیںجمعیت علماء اہل حدیث

جمعیت علماء اہل حدیث کے چیرمین قاضی عبدالقدیر خاموش نے کہا ہے کہ مولانا فضل الرحمان منافقت اور دوغلی سیاست کے بے تاج بادشاہ ہیں۔ موقف تبدیل کرنا اور خود ساختہ آئینی تشریحات میں وہ اپنا ثانی نہیں رکھتے۔ ہر حکومت میں شریک اقتدار بھی ہوتے ہیں اور اپوزیشن بھی کرتے ہیں۔ مگر حیران کن بات ہے کہ پیپلز پارٹی ہو یا مسلم لیگ ن دونوں اس کی مکاریوں میں آتی رہی ہیں۔ علما کے وفود سے گفتگو کرتے ہوئے قاضی عبدالقدیر خاموش نے کہا کہ مولانا فضل الرحمان نے تحریک انصاف کے دھرنے کے دوران احتجاجاً مستعفی ہونے والے ارکان کے استعفے منظور کروانے کے لئے جے یو آئی کے سربراہ نے پارلیمنٹ میں تحریک پیش کردی تھی لیکن جب ایم کیو ایم کے ارکان نے کراچی کے حالات پر استعفے پیش کردیے تو وہی مولانا صاحب پارلیمنٹ کے نمائندے بن کر متحدہ قومی موومنٹ کے ہیڈ کوارٹرز نائن زیرو پہنچ جاتے ہیں۔ تاکہ ایم کیو ایم کے استعفے واپس کروائے جاسکیں۔ انہوں نے کہا کہ مولا نا فضل الرحمان منافقت کے وہ گر جاتے ہیں جو انہیں آئین کی بجائے مالی سیاست کرنے پر آمادہ کرتے ہیں۔ انہیں علما اور خود اپنے والد مفتی محمود کی سیاست کا خیال کرنا چاہیے۔ ان کا کہنا تھا کہ ایسے درباری ملاوں کی وجہ سے دینی حلقوں کی سیاست پر لوگ انگلیاں اٹھاتے ہیں۔ مگر افسوس کہ پھر بھی یہ انتخابات میں لوگوں کو بیوقوف بنا کر پارلیمنٹ میں پہنچ جاتے ہیں۔

ٹیگز

متعلقہ مضامین

Back to top button
Close