پاکستان

جامعہ کراچی:شعبہ اسلامک لرننگ میں فرقہ وارانہ تعصب شیعہ و سنی مسلمانوں کے لئے دروازے بند

کراچی کی معروف تعلیمی درس گاہ جامعہ کراچی بھی فرقہ وارانہ تعصب کا شکار ہوگئی ہے، اطلاعات کے مطابق جامعہ کراچی کی فکلیٹی آف اسلامک اسٹڈیز میں کئی سالوں سے شیعہ اور بریلوی سنی مسلمانوں کے لئے اعلی تعلیم حاصل کرنے کے دروازوں پر غیر محسوس طریقہ سے پابندی لگا دی گئی ہے۔

ذرائع نے بتایا ہے کہ کئی سالوں سے شعبہ اسلامک لرننگ میں شیعہ اور بریلوی مسلمانوں کا پی ایچ ڈی و ایم فل پروگرام داخلہ لینا پہاڑ توڑنے کے برابر ہوگیا ہے، جبکہ ڈاکڑ شکیل اوج کی شہادت کے بعد مزید مشکلات بڑھ گئی ہیں۔

روان سال شعبہ اسلامک لرننگ میں ایم فل پروگرام میں داخلہ لینے کے لئے کوشش کرنے والے ایک طالب نے بتایا کہ شیعہ مسلمانوں کی علیحدہ فقہ ہونے کے باوجود ایم فل پروگرام میں جنرل ٹیسٹ لیا گیا جس میں شیعہ فقہ سے کچھ نہیں پوچھا گیا، لہذا نتجہ یہی نکالا کے ایک شیعہ بھی ایم فل پروگرام میں شامل نا ہوسکا، طلبہ کا کہنا تھا کہ جامعہ کراچی شیعہ فقہ کے مطابق علیحدہ سے ایم فل پروگرام شروع کرے۔

دوسرئ جانب سنی بریلوی مسلمان بھی روان سال ایم فل پروگرام میں داخلہ لینے سے قاصر رہے، جبکہ پاس ہونے والے تین افراد کا تعلق ایک مخصوص فرقہ سے ہے، اس مخصوص فرقہ کی پہلے سے شعبہ پر اجارہ داری قائم ہے۔

شعبہ اسلامک اسٹڈیز میں مسلکی بنیاد پر تعصب نیا نہیں ہے، جو مادر علمی کے لئے زہر قاتل ہے، جامعہ کراچی کی انتظامیہ اس حوالے سے حل طلب اقدام اُٹھانے سے بھی قاصر ہے، لہذا انتظامیہ کو چاہیئے کہ اسلامک فیکلٹی میں تمام فرقوں کی نمائندگی کو یقنی بناتے ہوئے متفقہ کورس اور تعلیمی پروگرام (ایم فل ،پی ایچ ڈی، بی ایس) معتارف کروائے۔

ٹیگز
Show More

متعلقہ مضامین

Back to top button
Close