پاکستان

متشدد انتہا پسندوں کو رینجرز اور ایف سی میں بھرتی کرنے کی تجویز حکومت کو پیش کردی گئی

شیعیت نیوز: پاکستان آرمی کے سابق لیفٹنٹ جنرل امجد شعیب نے انکشاف کیا کہ موجودہ حکومت کو آئی ایس آئی کی جانب سے یہ تجویز پیش کی گئی ہے کہ وہ متشدد انتہاپسندوں اور خاص طور ہر جنوبی پنجاب سے تعلق رکھنے والے کو رینجرز اور ایف سی (فرنٹیر کونسٹیبلری ) میں بھرتی کریں۔ پہلے ان کو ڈی ریڈیکلائز کریں ہھر انہیں مذکورہ سیکیورٹی اداروں میں روزگار دیں

یہ انکشاف انہوں معروف کالم نگار اور صحافی عارف نظامی کے لائیو پروگرام میں کیا، سابق جنر ل نے بتایا کہ یہ تجویز خفیہ ادارے کی جانب سے اسی سال اپریل کے مہینے میں دی گئی تھی جسکے مطابق بعض کالعدم جماعتوں کے عسکریت پسندوں کو رینجرز اور ایف سی میں بھرتی کے ساتھ ساتھ انہیں قومی دھارے میں بھی ایڈجسٹ کرنے کی تجویز بھی شامل تھی. یاد رہے کہ جنوبی پنجاب سے تعلق رکھنے والی جماعتوں میں کالعدم لشکر جھنگوی اور کالعدم سپاہ صحابہ بھی شامل ہیں۔

اس پروگرا م کے دوران سابق جنرل امجد شعیب نے تصدیق کی کہ کالعدم لشکر جھنگوی اور داعش ایک ہی تصویر کے دو رخ ہیں۔

انہوںنے کہا کہ دوسری تجویز یہ تھی کہ کالعدم جماعت الدعوۃ اور دیگر جماعتوں کو ملک کی مین اسٹریم سیاست میں شامل کیا جائے، انہوںنے کہا کہ اس پروپوزل کو نیکٹا کو بھیجا گیا تھاجہاں وہ سردخانے کی نذر کردیا گیا.

اگر ان دہشتگردوں کو اس طرح کی سہولت فراہم کی جارہی ہے تو محب وطن پاکستانی یہ سوال کرنے کا حق رکھتےہیں کہ آخر ان مجرموں کا کیا قصور ہے جو دیگر جرائم کی پاداش میں سزائیں بھگتتے رہتے ہیں. انہیں بھی ملکی سیاست میں یہ حقوق دیے جائیں اور کسی سیکورٹی ادارے میں بھرتی کردیا جائے تاکہ، اسی طرح اُن  بے گناہ شیعہ علماء اور جوانوں کا کیا جرم ہے جنہیں غیر قانوی طور پر گرفتار کیا ہوا ہے؟ یہ مراعاتیں صرف مخصوص شدت پسندوں کے لئے ہی کیوں ہیں؟

 

ٹیگز
Show More

متعلقہ مضامین

Back to top button
Close