پاکستان

مسرور نواز جھنگوی اور لدھیانوی کے درمیان شیدید اختلافات

کالعدم دہشت گرد تنظیم سپاہ صحابہ ( اھلسنت و الجماعت ) مین ایک بار پھر اقتدار کی رسہ کشی زور پکڑ گئی ھے ۔ ملعون اعظم طارق کے بیٹوں کہ بعد اب کالعدم تنظیم کے بانی سرغنہ حق نواز جھنگوی ملعون کا بیٹا مسرور نواز جھنگوی نے بھی میدان سیاست میں قدم رکھ دیا ۔

ذرائع نے شیعیت نیوز کو بتایا ھے کہ دہشت گرد تنظیم کالعدم سپاہ صحابہ ( اھلسنت و الجماعت ) کہ سرغنہ احمد لدھیانوی کہ جعلی اثاثوں میں PP-78 پنجاب آسمبلی میں شیخ وقاص اکرم کے ھاتھوں پنجاب ھائی کورٹ میں نااہلی کے بعد لدھیانوی اس کیس پہ سپریم کورٹ میں اپیل کرنا چاھتے تھے لیکن انہی کہ گروہ کہ ایک اور امیدوار مسرور نواز جھنگوی نے انکا راستہ روک دیا اور خود انتخاب لڑنے کا اعلان کردیا اور لدھیانوی کو واضح پیغام بھی دے دیا کہ اس دہشت گرد جماعت میں انکا حق زیادہ ھے اور وھی اس سیٹ سے الیکشن لڑے گا وگرنہ حالات کی ذمہ دار خود لدھیانوی اور اسکا گروہ ھونگے ۔

واضح رھے کہ مسرور نواز جھنگوی کو اس سیٹ پہ اعظم طارق اور ملک اسحاق گروپ کی بھی بھرپور حمائت حاصل ھے ۔
ملعون حق نواز جھنگوی اور ملعون اعظم طارق کا خاندان اسوقت ملک اسحاق کا حامی سمجھا جاتا ھے اور وہ ملک اسحاق کی زندگی میں انکے قریب جاچکے تھے ۔ کالعدم دہشتگرد گروہ کے بانی سرغنوں کہ اھل خانہ احمد لدھیانوی اور خادم ڈھلوں کو ملک اسحاق اور اسکے ساتھی دہشتگردوں کی ھلاکت کا ذمہ دار سمجھتے ھیں اور اب بھی دونوں گروھوں میں شدید اختلافات پائے جاتے ھینُ ۔
واضح رھے کہ جھنگوی کا بڑا بیٹا بھی کچھ سال قبل کراچی میں قائم سعودی قونصلیٹ سے ریال لاتے ھوئے اعظم طارق گروپ کہ ھاتھوں اغواء کرلیا گیا تھا اور بعد میں سرجانی ٹاون سے اسکی نعش ملی تھی لیکن کالعدم سپاہ صحابہ کی درخواست پہ ایجنسیوں نے اس کیس کو دبا دیا ھے۔
سعودی عرب، ھندوستانُ  اور امریکہ کی بے پناہ مالی معاونت کہ بعد ایک بار پھر کالعدم سپاہ صحابہ میں پیسوں کے حصول اور اقتدار کی رسہ کشی زور پکڑ چکی ھے اور انکے درمیان پھر تصادم کی اطلاعات سامنے ارھی ھیں جیسے ملک اسحاق کی ھلاکت سے قبل کی صورتحال تھی

ٹیگز
Show More

متعلقہ مضامین

Back to top button
Close