یمن

یمن کے خلاف جارحیت میں برطانوی ساختہ کلسٹر بموں کا استعمال

سعودی عرب نے جنگ یمن کے دوران برطانوی ساخت کے کلسٹر بموں کا استعمال کیا ہے اور حکومت برطانیہ کو بھی اس بات کا پورا علم تھا کہ سعودی عرب ایسا کر رہا ہے۔

برطانوی ذرائع ابلاغ کے مطابق وزدفاع مائیکل فالون ان عہدیداروں میں سے ایک ہیں جنہیں اس بات کا پورا علم تھا کہ سعودی عرب یمن پر جارحیت کے دوران برطانوی ساخت کے کلسٹر بم استعمال کر رہا ہے۔
ہیومین رائٹس واچ سمیت انسانی حقوق کے متعدد ادارے، سعودی عرب کی جانب سے یمن کے خلاف جارحیت میں کلسٹر بموں کے استعمال سے متعلق کئی رپورٹیں عالمی سطح پر پیش کر چکے ہیں۔

رواں سال مئی میں ایمنسٹی انٹرنیشنل کی پیش کردہ دستاویزات میں اس بات کی نشاندہی کی گئی تھی کہ سعودی عرب نے یمن میں عام شہریوں کے خلاف برطانوی ساخت کے کلسٹر بم برسائے ہیں۔
برطانیہ نے سن دو ہزار دس میں کلسٹر بموں کے استعمال پر پابندی کے معاہدے میں شمولیت اختیار کی تھی۔ اس معاہدے کے تحت حکومت برطانیہ اپنے تیار کردہ تمام کلسٹر بموں کو ضائع کرنے اور دیگر ملکوں کی جانب سے ان کے استعمال کو روکنے کی پابند ہے۔
کلسٹر بموں کا اطلاق ایسے ہتھیاروں اور بموں پر ہوتا ہے جو چھوٹے چھوٹے درجنوں یا سیکڑوں بموں پر مشتمل ہوتے ہیں اور ہدف پر لگنے کے بعد فٹبال کے ایک میدان کے برابر علاقے میں پھیل جاتے ہیں۔
اکثر کلسٹر بم فوری طور پر نہیں پھٹ پاتے اور علاقے کو بارودی سرنگوں سے بھرے ایک میدان میں تبدیل کر دیتے ہیں۔
کلسٹر بم اپنے پھیلاؤ کے سبب، بڑے پیمانے پر انسانی جانوں کے نقصان کا سبب بنتے ہیں اور نہ پھٹنے کی صورت میں ان میں دھماکہ خیز مواد کئی مہینوں بعد تک بھی عام لوگوں کی جانیں لیتا رہتا ہے۔
یمن کے نئے وزیر اعظم عبدالعزیز بن جبتور نے بھی برطانیہ کو یمن میں جنگی جرائم کا ذمہ دار قرار دیا ہے۔
انہوں نے کہا کہ برطانیہ نے سعودی عرب کو کلسٹر بم فروخت کیے ہیں اور اسے یہ بھی معلوم ہے کہ سعودی عرب، یمن کے عوام کے خلاف ان بموں کا استعمال کر رہا ہے۔
انہوں نے واضح الفاظ میں کہا کہ برطانیہ بھی یمنی عوام کے خلاف بمباری میں سعودی عرب کے ساتھ برابر کا شریک ہے۔
سعودی عرب نے چھبیس مارچ دو ہزار پندرہ سے یمن کے خلاف فضائی جارحیت کا آغاز کیا تھا جس کے نتیجے میں گیارہ ہزار سے زائد یمنی شہری شہید اور ہزاروں زخمی ہوئے ہیں۔
سعودی حکومت یمن کے اسکولوں، اسپتالوں، رہائشی علاقوں، سڑکوں، بازاروں اور بنیادی تنصیبات کو مسلسل فضائی جارحیت کا نشانہ بنا رہی ہے۔

ٹیگز
Show More

متعلقہ مضامین

Back to top button
Close