پاکستان

جیل بھرو تحریک کا تیسرا مرحلہ، مولانا ناظم علی نے ساتھیوں سمیت ملیر سے گرفتاری پیش کردی

شیعیت نیوز: لاپتہ شیعہ افراد کی عدم بازیابی کے خلاف شروع ہونے والی جیل بھرو تحریک اپنے تیسرے مرحلے میں داخل، جامع مسجد دربار حسینی کے باہر سے شیعہ ایکشن کمیٹی کے رہنما مولانا محمد ناظم علی آزاد نے اپنے رفقاء کے ہمراہ گرفتاری پیش کردی ہے۔

تفصیلات کے مطابق لاپتہ شیعہ افراد کی عدم بازیابی کے خلاف شروع ہونے والی جیل بھرو تحریک اپنے تیسرے مرحلے میں داخل ہوگئی ہے، جامع مسجد دربار حسینی کے باہر مومنین کا شدید احتجاج بھی ہوا جسکے بعد شیعہ ایکشن کمیٹی کے مرکزی رہنما مولانا   ناظم علی آزاد ساتھیوں کے ہمراہ گرفتاری پیش کردی۔

اس موقع پر خطاب کرتے ہوئے مولانا ناظم علی آزاد نے کہا کہ گمشدہ نوجوانوں کی بازیابی کے لیے احتجاج ہمارا آئینی حق ہے، ملت تشیع کہ لاپتہ کیے گئے افراد نے اگر قانون شکنی کی ہے تو انہیں عدالت میں پیش کیا جائے ورنہ انہیں رہا کیا جائے، ہمارے ائمہ نے اپنے قاتلوں کو پانی پلایا کس طرح ممکن ہے کہ ان کے ماننے والے کسی تخریب کاری میں ملوث ہوں۔

واضح رہے کہ جیل بھرو تحریک کے ثمرا ت بھی آنا شروع ہوگئے ہیں اور ملک کے دیگر حصوں سے 5 لاپتہ شیعہ جوان بازیاب ہوگئےہیں۔

شیعہ لاپتہ افراد کی بازیابی کے لئے جیل بھرو تحریک کے پہلے مرحلے میں علامہ حسن ظفر نقوی نے دوسرے مرحلے میں علامہ احمد اقبال اور اب مولانا  محمد ناظم آزاد علی   نے رضاکارانہ گرفتاری پیش کی ہے۔

ٹیگز
Show More

متعلقہ مضامین

Back to top button
Close