پاکستان

شریف برادران اور عمران پر دہشت گرد حملوں کا خطرہ ہے، انٹیلجنس ذرائع

شیعیت نیوز: انتہائی قابلِ اعتماد ذرائع نےدعویٰ کیاہے کہ سابق وزیراعظم نواز شریف، اُن کے چھوٹے بھائی وزیراعلیٰ پنجاب میاں شہباز شریف اورچیئرمین تحریک انصاف(پی ٹی آئی) عمران خان اِن تمام افرادپر ممکنہ طورپر دہشتگرد حملے کاشدید خطرہ ہے۔ وزارتِ داخلہ کے ایک سینئیراہلکار نے نام ظاہر نہ کرنے کی شرط پر بتایا کہ’’ہمیں مختلف انٹلیجنس رپورٹس موصول ہوئیں ہیں جن سے ظاہر ہوتا ہے کہ بڑے رہنما اور اُن کےخاندان پرممکنہ طورپر دہشتگرد حملے ہوسکتےہیں۔‘‘ ایک بڑی انٹلیجنس ایجنسی کی جانب سے ملنے والی انٹلیجنس رپورٹس میں دعویٰ کیاگیاہے کہ تحریک طالبان پاکستان (ٹی ٹی پی) نواز شریف اور شہباز شریف کی فیملی کونشانہ بنا سکتی ہے۔‘‘ جب ہم نے پوچھا کہ کیا نواز شریف اور شہباز شریف کو بھی خطرہ ہے؟ توذرائع کا جواب تھا ’’بےشک‘‘۔ وفاقی وزارتِ داخلہ اور قانون نافذ کرنےوالے اداروں نے کئی بار دعویٰ کیاہے کہ انھوں نے ٹی ٹی پی کا نیٹورک اور انفراسٹرکچرملک سےختم کردیاہےاور اب دہشتگر ملک سے فرارہورہے ہیں۔ تاہم اُن کا دعویٰ ہے کہ پاکستان میں

آپریشنز کےبعد یہ کالعدم تنظیم افغانستان میں چھپ گئی ہے۔ رپورٹس سے ظاہر ہوتاہے کہ کالعدم جماعت کا امیر ملافضل اللہ حالیہ برسوں میں ظالم ترین دہشتگرد کے طور پر سامنے آیاہے، اس نے پشاور میں 16دسمبر2014کو آرمی پبلک سکول پرحملے کا حکم دیاتھا، حملے میں 156بے گناہ بچے شہید ہوئے تھے۔ ذرائع کا دعویٰ ہے کہ انٹلیجنس رپورٹس کے بعد نیشنل کائونٹر ٹیررازم اتھارٹی کی جانب سے تمام متعلقہ پولیس اور قانون نافذ کرنے والےاداروں کو باقاعدہ خط ارسال کردیا گیا ہے۔ اسی طرح انٹلیجنس کی جانب سے سربراہ تحریک انصاف عمران خان کولاحق خطرے سےمتعلق ایک الگ انٹلیجنس رپورٹ بھی موصول ہوئی ہے۔ ذرائع نےدعویٰ کیا کہ وزیرِ داخلہ احسن اقبال کی ہدایات پر عمران خان اور اُن کے ساتھیوں کو خطرے کےبارے میں سرکاری طور پرآگاہ کردیاگیاہے۔ ذرائع کا کہناہے کہ انٹلیجنس معلومات 14مارچ کوجلہم میں پنڈ دادن خان کے دورے سے چند دن قبل موصول ہوئی تھیں۔

ٹیگز
Show More

متعلقہ مضامین

Back to top button
Close