کاپی رائٹ کی وجہ سے آپ یہ مواد کاپی نہیں کر سکتے۔
مقالہ جات

سعودی عرب ہمارے بغیر اپنے آپ کو نہیں بچاسکتا

اسرائیل اور آل سعودمیں دوستی کاچرچا۔۔ لیکن کیا سعودی عوام بھی ان دوستیوں سے خوش ہے ؟ملاحضہ کیجئے زیل کے جھگڑے کو ۔۔۔
صیہونی غاصب ریاست اسرائیل کے معروف انسٹی ٹیوٹThe Begin-Sadat Institute
سے وابستہ اہم ریسرچر اور تجزیہ نگار ایڈی کوہن Eddie Cohenنے ٹیوٹر پر سعودی عرب سے وابستہ ایک مشہورٹیوٹر ہنڈل الردع السعودي کی جانب کی جانے والی ایک ٹیویٹ کی جواب میں کہا کہ سعودی عرب ہمارے بغیر اپنے پچھواڑے تک کو نہیں بچاسکتا ۔
ٹیوٹر سے چلنے والی یہ بحث اب اس قدر پھیل گئی کہ اسے عرب اہم نیوز سائیٹس اور صحافیوں کے درمیان بھی موضوع سخن بننے لگی ہے ۔
سعودی ٹیوٹر ہینڈل نے لکھا تھا کہ ’’قطری بادشاہ کی والدہ شیخہ موزہ نے اپنے صیہونی شوہر حمد بن جاسم کو اپنے بیٹے کو اقتدار دلوانے کے لئے مسند شاہی چھوڑنے پر مجبور کردیا اور امت کے دشمن اسرائیل اور ایران ہیں ۔
اس ٹیویٹ کے جواب میں اسرائیلی مشہور تجزیہ نگار ایڈی کوہن نے فورا جواب دیا کہ ’’ارے واہ کیا سچ میں ہم دشمن ہیں ؟تمہارے ولی عہد ہم سے مطالبہ کرتاہے کہ لبنان کی حزب اللہ اور یمن کی انصار اللہ کو ہم نشانہ بنائیں ،سعودی عرب اسرائیلی حمایت کے بغیر اپنے پچھواڑے کو خود اپنے ملک میں بھی نہیں بچاسکتا ،شام،یمن ،لبنان اور عراق کو تو دہنے ہی دو ۔۔۔زرا جاکر اپنے وزیر عبدالطیف آل شیخ سے ہی پوچھ لو ۔۔
ایڈی کوہن مزید لکھتا ہے کہ یہ ٹیوٹر ہینڈل سعودی اسرائیلی تعلقات کو خرا ب کررہا ہےاگر سعودی عرب ہمارے سے اچھے تعلقات چاہتا ہے کہ جس کے بارے وہ ٹرمپ اس کے داماد کوشنر اور بہو ایونکا کو واسطہ بنارہے ہیں تو سعودی حکام کو چاہیے کہ اس احمق ٹیوٹر ہینڈل پر پابندی لگادے ۔
یہ صیہونی مزید لکھتا ہے کہ دیکھو مصر کواور سیکھو کیسے حالات کا شکار ہے۔۔۔
واضح رہے کہ جب سے سعودی عرب اسرائیل کے ساتھ تعلقات کو نارمل کرنے اور صدی کی سب سے بڑی ڈیل کا حصہ بنے جارہا ہے تب سے سعودی عوام میں موجود بے چینی میں مزید اضافہ دیکھائی دیتا ہے کہ جس اظہار سوشل میڈیا خاص کر ٹیوٹر پر ہرگذرتے دن بڑھتا جارہا ہے ۔

ٹیگز
Show More

متعلقہ مضامین

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button
Close

Adblock Detected

Please consider supporting us by disabling your ad blocker