پاکستان

وزیراعظم، آرمی چیف ،چیف جسٹس اور وزیراعلیٰ سندھ سے لاپتہ شیعہ افراد کی رہائی کا مطالبہ کرتے ہیں ،ناصر شیرازی

شیعت نیوز:  ناصر شیرازی کا کہنا تھا کہ بے گناہ شہریوں کو جبری لاپتا کرنا قانون و انصاف کا قتل اور آئین پاکستان سے صریحاََ انحراف ہے۔جمہوری حکومت کے اس آمرانہ اقدام کے خلاف ملک کی ہر گلی محلے میں آواز بلند کی جائے گی۔نواز حکومت کے دور میں شیعہ افراد کے خلاف انتقامی کاروائیوں کا ہمیشہ آغاز ہوتا رہا ہے۔جب تک ملت تشیع کے لاپتا افراد کو بازیاب نہیں کرایا جاتا چین سے نہیں بیٹھیں گے انہوں نے کہا کہ ہم نے ہمیشہ مظلوم کی حمایت اور ظلم کے خلاف آواز بلند کی ہے۔ ملت کے لاپتا نوجوانوں پر اگر کوئی الزامات ہیں تو انہیں عدالتوں میں پیش کر کے سزائیں دلائی جائیں۔عدالتوں میں پیش نہ کیا جانا اس حقیقت کو ثابت کرنے کے لیے کافی ہے کہ ملت تشیع کے نوجوانوں کو بلاجواز حراست میں رکھا ہوا ہے۔ہم اسیران کے خانوادہ کے ساتھ کھڑے ہیں ۔ وزیر مملکت برائے انسانی حقوق نے کہا ہے کہ وہ جبری گمشدگی کیخلاف اقدامات کرینگے ہم اس پر عملدرآمد دیکھنا چاہتے ہیں -انہوں نے وزیر اعظم، آرمی چیف ،چیف جسٹس اور وزیر اعلیٰ سندھ سے مطالبہ کیا ہے کہ اس اہم مسئلہ کی سنگینی کا ادراک کریں اور ان خاندانوں کے دُکھ کو سمجھیں جن کے بچے کئی سالوں سے لاپتا ہیں۔جبری گمشدہ افراد کی بازیابی کا ہمارا مطالبہ اصولی اور آئینی ہے اگر اسے تسلیم نہ کیا گیا تو احتجاجی تحریک شروع کرنے کا حق رکھتے ہیں۔

ٹیگز

متعلقہ مضامین

Back to top button
Close