کاپی رائٹ کی وجہ سے آپ یہ مواد کاپی نہیں کر سکتے۔
سعودی عرب

جنت البقیع قبرستان میں والد کی تدفین چاہتے ہیں، باپ کی لاش دی جائے، بیٹوں کا مطالبہ

جمال خاشقجی کے بیٹوں35 سالہ صالح خاشقجی اور 33سالہ عبداللہ خاشقجی نے امریکی نیوز چینل کو خصوصی انٹرویو دیتے ہوئے آل سعود سے باپ کی لاش حوالہ کرنے کا مطالبہ کیا ہے۔

خاشقجی کے بیٹوں کا کہنا ہے کہ ہم نے سعودی حکام سے بات کی ہے اور ہمیں امید ہے کہ یہ جلد ممکن ہو سکے گا۔

عبد اللہ خاشقجی کا کہنا ہے کہ میں امید کرتا ہوں کہ جو کچھ ہوا وہ والد کے لیے زیادہ تکلیف دہ نہ رہا ہو اور انہیں آرام دہ موت دی گئی ہو۔

صالح خاشقجی نے مزید کہا کہ کچھ لوگ میرے والد کی موت کو سیاسی طور پر استعمال کر رہے ہیں جس سے ہم متفق نہیں ہم نے اس حوالے سے نیوز رپورٹس پر انحصار کیا ہے۔

عبد اللہ خاشقجی نے مزید کہا کہ ابھی بہت کچھ اپ اور ڈاؤن ہے، ہم ہمارے والد پر کیا گزری ہم یہ جاننے کی پوری کوشش کررہے ہیں، یہ عام صورت حال نہیں ہے، نہ ہی عام موت ہے بلکہ ہمارے مشکل اور الجھی ہوئی صورت حال ہے۔

واضح رہے کہ سعودی صحافی جمال خاشقجی کو ایک ماہ قبل ترک شہر استنبول میں واقع سعودی قونصل خانے میں قتل کر دیا گیا تھا۔

ٹیگز
Show More

متعلقہ مضامین

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button
Close