پاکستان

ترکی کے ساتھ ٹریڈ فریم ورک کے معاہدے کے بعد ایران کے ساتھ دو طرفہ تجارت کو بڑھایا جائے گا، اسدعمر

شیعیت نیوز: وزیر خزانہ اسد عمر نے دیگر دوست ممالک سے بھی امداد کی امید ظاہر کرتے ہوئے کہا ہے کہ ہم دوست ممالک کے پاس آخری دفعہ مدد کے لئے جا رہے ہیں۔ اسلام آباد میں تقریب سے خطاب کرتے ہوئے اسد عمر نے کہا کہ سی پیک پاکستان اور چین کی دوستی کی ایک بڑی مثال ہے، سی پیک پاکستان اور خطے کے لیے اہم ہے، اس منصوبے سے خطے کے دیگر ممالک کو بھی استفادہ کرنا چاہیئے، سی پیک دو ممالک کے درمیان معاہدہ ہے، پاکستان اور چین نے تیسرے ملک کو سرمایہ کاری کی دعوت دی ہے، تیسرا ملک مختلف منصوبوں میں سرمایہ کاری کرسکتا ہے۔ انہوں نے کہا کہ سعودی عرب اور دیگر دوست ممالک نے مشکل وقت میں پاکستان کا ساتھ دیا، چین نے بھی سعودی عرب کی طرح پاکستان کی مشکل وقت میں مدد کی ہے، امید ہے دیگر دوست ممالک سے بھی امداد آئے گی اور دوست ممالک کے پاس آخری دفعہ مدد کے لئے جا رہے ہیں۔

وزیر خزانہ کا کہنا تھا کہ وزارت خزانہ شارٹ ٹرم، میڈیم ٹرم اور لانگ ٹرم حکمت عملی پر کام کر رہی ہے، چین کے ساتھ، تجارت، صنعت اور انفارمیشن کے میدان میں تعاون بڑھانا چاہتے ہیں، جبکہ سی پیک میں پرائیویٹ سیکٹر کا کردار بڑھایا جائے گا۔ اسد عمر نے مزید کہا کہ ترکی کے ساتھ اپریل میں ٹریڈ فریم ورک کا معاہدہ کیا جائے گا، اس معاہدے سے ایران اور یورپ کے ساتھ تجارت بڑھے گی، ایران کے ساتھ دو طرفہ تجارت کو بڑھایا جائے گا۔ ان کا کہنا تھا کہ آئی ایم ایف کے ساتھ بات چیت چل رہی ہے، گذشتہ ہفتے دو بار رابطہ ہوا ہے۔ منی بجٹ سے متعلق وزیر خزانہ نے کہا کہ بجٹ میں کاروباری طبقے کو سہولیات دیں گے۔

ٹیگز

متعلقہ مضامین

Back to top button
Close