پاکستان

داعش بلوچستان کے امیرکا تعلق مستونگ کے نواحی علاقہ سے تھا ،سر کی قیمت 50 لاکھ مقرر تھی

شیعیت نیوز: داعش بلوچستان امیر مفتی ہدایت اللہ ولد حامداللہ کا تعلق مستونگ کے نواحی علاقہ کنڈاوہ سے تھااور دوسال قبل سیکورٹی فورسز نے اس کا مدرسہ کلی کنڈاوہ میں مسمار کردیا تھا اور اس کے سر کی قیمت پچاس لاکھ روپے مقرر کی تھی اور مفتی ہدایت اللہ کافی عرصے سے روپوش تھا۔ تفصیلات کے مستونگ کے نواحی علاقہ سے تعلق رکھنے والے مفتی ہدایت اللہ ولد حامداللہ جسے آج ایک کارروائی میں قلات کے پہاڑی علاقہ رودینجو میں ہلاک کیا گیا، متعدد دہشت گرد تنظیموں سے تعلق رکھتا تھا اور داعش بلوچستان کاامیر تھا۔ اس کا مدرسہ کنڈاوہ اور کلی تیری کے سنگم پر واقع تھا جس کو مبینہ طور پر سیکورٹی فورسز پر 2016 میں مسمار کرد یا تھا۔ ڈیڑھ سال قبل بھی سیکورٹی فورسز نے کلی کنڈاوہ میں اس کے گھر پر چھاپے کے دوران مقابلے میں دو دہشت گرد ہلاک کیے تھے مگر مفتی ہدایت اللہ عرصے سے منظرعام سے غائب تھا اورصوبائی محکمہ داخلہ نے اسے دہشت گرد قرار دیکر اس کے سر کی قیمت 50 لاکھ روپے مقرر کی تھی۔

ٹیگز
Show More

متعلقہ مضامین

Back to top button
Close