اہم ترین خبریںسعودی عرب

آل سعود حکومت کے شیعہ نشین علاقوں میں عزاداری مخالف سخت اقدامات

شیعیت نیوز : عرب ای مجلے العہد کے مطابق محرم الحرام کی مناسبت سے حجاز کے مشرقی علاقے ’’قطیف‘‘ میں منعقد ہونے والی مجالس عزاء کے خلاف آل سعود حکومت نے انتہائی سخت اقدامات اٹھا رکھے ہیں جبکہ اس حوالے سے میڈیا کوریج پر بھی مکمل پابندی عائد ہے۔

رپورٹ کے مطابق سعودی شاہی حکومت کی جانب سے مجالس عزاء کے انعقاد کی دی گئی انتہائی محدود اجازت کے باوجود، حتی امام بارگاہوں اور چاردیواری کے اندر بھی کسی قسم کے ساؤنڈ سسٹم کا استعمال ممنوع قرار دے دیا گیا ہے۔

اس حوالے سے گزشتہ جمعے کے روز عرب نیوز چینل نباکی جانب سے نشر کی جانے والی ایک رپورٹ میں اطلاع دی گئی تھی کہ قطیف اور الاحساء کے رہائشیوں کو آل سعود حکومت کی جانب سے محرم الحرام کی مجالس عزاء کے انعقاد پر براہ راست ڈرایا دھمکایا بھی جا رہا ہے۔

یہ بھی پڑھیں : آل سعود کی سخت دھمکیوں کے باوجود عزاداری کا سلسلہ جاری

اطلاعات کے مطابق سعودی شاہی حکومت مجالس عزاء کے انعقاد میں روڑے اٹکانے کے اپنے دوسرے ہتھکنڈوں کے ساتھ ساتھ کرونا وائرس کے پھیلاؤ کا بہانہ بھی بنا رہی ہے جبکہ منعقد ہونے والی مجالس عزاء کے اندر کرونا وائرس سے بچاؤ کی تدابیر کا خاص خیال رکھا جا رہا ہے۔

ذرائع کے مطابق آل سعود حکومت کی جانب سے مجالس عزاء پر ہونے والی یہ سخت اقدامات ایک ایسے حال میں روا رکھی جا رہی ہے جب خود سعودی حکومت کی جانب سے اس مقدس سرزمین پر شروع کی جانے والی لہو و لعب اور فحاشی کی محافل پر ایسی کوئی پابندی عائد نہیں۔

علاوہ ازیں حجاز کے شہروں قطیف اور الاحساء میں سعودی شاہی حکومت کی جانب سے، خصوصا ماہِ محرم الحرام کے دوران عزاداری سے متعلق کسی بھی قسم کے بینر، پرچم، پلے کارڈ یا کسی بھی ایسی چیز کا استعمال بھی ممنوع قرار دے دیا گیا ہے جو عزاداری کے پیغام کی حامل ہو۔

ٹیگز

متعلقہ مضامین

Back to top button
Close