پاکستان

ایڈووکیٹ یافث نوید ہاشمی کی جبری گمشدگی کے خلاف لاہور میں مظاہرہ

پاکستان میں جبری لاپتہ شیعہ افراد کے ورثاء پریشان ہیں

شیعت نیوز :ایڈووکیٹ یافث نوید ہاشمی نے اگر کوئی جرم کیا ہے تو انھیں عدالت میں پیش کیا جائے اور سزا دی جائے، لیکن اگر وہ بے قصور ہیں تو انھیں فی الفور رہا کیا جائے۔

اطلاعات کے مطابق ایڈووکیٹ یافث نوید ہاشمی کی جبری گمشدگی اور عدم بازیابی کے خلاف لاہور کے علاقے گلبرگ کے مین بلیوارڈ کے لبرٹی چوک پر میں خانوادہ اور سول سوسائٹی کنیزان زینب کی جانب سے احتجاجی مظاہرہ کیا گیا۔ مظاہرین نے منہ پر سیاہ پٹیاں اور ہاتھوں پر علامتی ہتھکڑیاں پہن کر جبری گمشدگیوں کیخلاف مظاہرہ کیا۔ مظاہرین سے خطاب کرتے ہوئے ایڈووکیٹ شکیل نقوی کا کہنا تھا پاکستان میں جبری گمشدگی ایک سنگین مسئلہ بن چکا ہے، ہم ایسے ملک کے باشندے ہیں جہاں ادارے بھی ہیں اور قانون بھی لیکن بدقسمتی سے جبری گمشدگیوں کا سلسلہ تھم نہیں رہا۔

یہ بھی پڑھیں :علامہ باقر زیدی کی ایم ڈبلیو ایم جنوبی پنجاب کے رہنماء کی جبری گمشدگی کی مذمت

ایڈووکیٹ شکیل نقوی کا کہنا تھا کہ پاکستان میں جبری لاپتہ شیعہ افراد کے ورثاء پریشان ہیں، ہم اس غیر آئینی قدم کے خلاف خاموش نہیں بیٹھیں گے۔انھوں نے مزید کہا کہ اگر یافث نوید ہاشمی نے کوئی جرم کیا ہے تو انھیں فوری طور پر عدالت میں پیش کیا جائے اور سزا دی جائے، لیکن اگر وہ بے قصور ہیں انھیں فی الفور رہا کرتے ہوئے ان کے ورثاء کو شدید ذہنی اذیت سے نجات دی جائے۔

ٹیگز
Show More

متعلقہ مضامین

Back to top button
Close