دنیا

افغانستان کے دو شہروں سے امریکی فوجیوں کا انخلاء، 45 طالبان ہلاک

شیعت نیوز : افغانستان کے صوبہ ننگرہار کے دو شہروں سے امریکی دہشت گرد فوجی باہر نکل گئے۔ دوسری طرف افغان صوبے ہرات میں افغان فورسز کے فضائی حملوں میں متعدد طالبان ہلاک اور زخمی ہوگئے۔

آوا نیوز ایجنسی کی رپورٹ کے مطابق ننگرہار کے گورنر ہاؤس کے ترجمان عطاء اللہ خوگیانی نے جمعرات کو اعلان کیا ہے کہ اس صوبے کے دو شہروں اچین اور ہسکہ مینہ سے امریکہ کے زیرکمان غیر ملکی فوجی باہر نکل گئے ہیں۔

عطاء اللہ خوگیانی نے مزید کہا کہ غیر ملکی فوجیوں نے ان دونوں شہروں کی سیکورٹی افغان سیکورٹی اہلکاروں کے حوالے کر دی ہے۔

ضلع اچین اور ہسکہ مینہ اضلاع سے غیرملکی فوجی ایسے عالم میں باہر نکلے ہیں کہ صوبہ ننگرہار کے اکثر علاقے طالبان اور داعش کے قبضے میں ہیں اور غیر ملکی فوجیوں پر حملے کرتے رہے ہیں اور یہی چیز قابضوں کی مسلسل تشویش کا باعث بن گئی تھی۔

یہ بھی پڑھیں : نائجیریائی شہریوں کی غریبوں کی مدد کرنا بھاری پڑی، بوکو حرام نے سر قلم دیئے

دوسری طرف افغان صوبے ہرات میں افغان فورسز کے فضائی حملوں میں متعدد طالبان ہلاک اور زخمی ہوگئے۔

آئی آر آئی بی کی رپورٹ کے مطابق افغان صوبے ہرات کے ادرسکن علاقے میں طالبان کے ایک اجلاس پر افغان فورسز کے فضائی حملے میں 45 طالبان ہلاک اور 16 زخمی ہوگئے۔

ہرات کے گورنر کے ترجمان جیلانی فرہاد‌ کا کہنا ہے کہ فضائی حملے میں حکومتی تنصیبات پر حملوں کی منصوبہ بندی کرتے ہوئے طالبان کو نشانہ بنایا گیا۔

افغان حکام کے مطابق حملے میں طالبان کے متعدد کمانڈر ہلاک اور زخمی ہوئے، بڑی تعداد میں طالبان کا اسلحہ و بارود بھی تباہ ہوا۔

دوسری جانب آوا نیوز ایجنسی کی رپورٹ کے مطابق اروزگان کے گورنر کے ترجمان زرگی عبادی نے کہا کہ اروزگان کے خاص ضلع میں ایک بم کا دھماکا ہوا جس کے نتیجے میں افغان فوج کے تین کمانڈر اور فوجی اہلکار جاں بحق ہوگئے۔ زرگی عبادی نے اس دھماکے کا ذمہ دار طالبان کو قرار دیا ہے۔

طالبان نے دوحہ میں امریکہ کے نام نہاد امن سمجھوتے پر دستخط کے بعد افغانستان کے مختلف علاقوں میں اپنے حملے تیز کردیئے ہیں۔

ٹیگز

متعلقہ مضامین

Back to top button
Close