دنیا

افغانستان: صوبہ فریاب میں وہابی دہشت گردوں کا مسجد پر حملہ، 4 نمازی شہید

شیعت نیوز : افغانستان کے شمالی صوبہ فریاب کی پولیس کے ترجمان عبدالکریم یوراش نے کہا ہے کہ وہابی دہشت گردوں نے مسجد پر فائرنگ کردی جس کے نتیجے میں 4 نمازی شہیدجبکہ 3 زخمی ہوگئے ہیں۔

رپورٹ کے مطابق طالبان دہشت گردوں نے صوبہ فریاب کے صدرمقام میمنہ شہر میں سوموار کی شام کو مسجد پر گولیوں کی بوچھاڑ کردی جس سے 4 نمازی شہیدجبکہ 3زخمی ہوگئے۔

حملہ کے بعد حملہ آور ایک کار پر فرار ہوگئے لیکن قریبی پولیس نے انہیں روک لیا، صوبے میں طالبان کے جاسوس ادارے کے رکن قاری نقیب سمیت 2حملہ آور ہلاک ہوگئے۔

یہ بھی پڑھیں : حکومت بحرین کو اسرائیل کے بجائے عوام کے ساتھ تعلقات کو مضبوط کرنا چاہیے۔ ایران

دوسری جانب افغانستان کے صوبہ سمنگان میںافغان انٹیلی جنس کے دفتر کے قریب کار بم دھماکے اور فائرنگ کے نتیجے میں 11 افراد ہلاک اور متعدد زخمی ہوگئے ہیں۔ ہلاک ہونے والوں میں 4 طالبان دہشت گرد بھی شامل ہیں۔ وہابی دہشت گرد تنظیم طالبان نے حملے کی ذمہ داری قبول کرلی۔

سرکاری حکام کے مطابق یہ واقعہ شمالی افغانستان کے صوبہ سمنگان کے دارالخلافہ ایبک میں پیش آیا۔ کار بم دھماکہ افغانستان کے مرکزی خفیہ ادارے این ڈی ایس (نیشنل ڈائریکٹوریٹ آف سیکیورٹی) کے دفتر کے قریب ہوا۔

گورنر صوبہ سمنگان کے ترجمان محمد صادق عزیزی نے کہا ہے کہ یہ ایک پیچیدہ حملہ تھا جس کا آغاز کار بم دھماکے سے ہوا اور اس کا اختتام اس وقت ہوا جب سکیورٹی فورسز اور حملہ آوروں کی فائرنگ کے تبادلے میں چاروں حملہ آور مارے گئے۔

صوبائی ہیلتھ ڈائریکٹر خلیل مصدق نے کہا ہے کہ حملے میں 11 افراد ہلاک ہوئے جن میں سیکیورٹی اہلکار بھی شامل ہیں جب کہ 43 افراد زخمی ہوئے ہیں۔

ادھر طالبان کے ترجمان ذبیح اللہ مجاہد نے حملے کی ذمہ داری قبول کرتے ہوئے کہا ہے کہ صوبے میں موجودہ ہمارے فعال گروپ نے یہ حملہ کیا ہے۔

ٹیگز

متعلقہ مضامین

Back to top button
Close