یمن

ایک دن میں یمن کے الحدیدہ صوبے میں آل سعود کے 97 حملے

شیعت نیوز : سعودی اتحاد کے آلۂ کاروں نے گزشتہ 24 گھنٹوں کے دوران یمن کے الحدیدہ صوبے میں 97 بار جنگ بندی کی خلاف ورزی کی ہے۔

یمن کے ایک فوجی ذریعے نے المسیرہ ٹی وی چینل سے گفتگو کرتے ہوئے اعلان کیا کہ سعودی عرب اور اسکے اتحادیوں نے الحدیدہ صوبے میں ستانوے بار جنگ بندی معاہدے کی خلاف ورزی کرتے ہوئے مختلف علاقوں میں ہلکے اور بھاری ہتھیاروں سے نشانہ بنایا ہے۔

سعودی اتحاد نے یمن کے صوبے الحدیدہ کے مختلف علاقوں کو جارحیت کا نشانہ بنایا ہے جس میں متعدد بچوں سمیت کئی عام شہری شہید و زخمی ہو گئے۔

المسیرہ ٹی وی کی رپورٹ کے مطابق جارح سعودی اتحاد نے صوبے الحدیدہ کے شہر بیت الفقیہ میں رہائشی مکانات کو نشانہ بنایا جس میں ایک شخص شہید اور گیارہ افراد زخمی ہو گئے۔ زخمیوں میں چھے بچے بھی شامل ہیں۔

یہ بھی پڑھیں : اہل بیت ؑ دشمن تحفظ بنیاداسلام بل،داعشی رہنمامعاویہ اعظم پنجاب اسمبلی کی تقسیم کے مشن پر کاربند

جارح سعودی اتحاد نے اسی طرح صوبے الحدیدہ کے شہر التحیتا کے علاقے الجبلیہ کو بھی اپنے حملے کا نشانہ بنایا۔ یمن سے ہی ایک اور خبر یہ ہے کہ صوبے ابین کے صدر مقام زنجبار میں یمن کی مستعفی حکومت سے وابستہ فوجیوں اور عبوری کونسل کے فوجی اہلکاروں کے درمیان جھڑپیں پھر شروع ہو گئی ہیں۔

تیرہ دسمبر دو ہزار اٹھارہ میں سعودی اور یمنی وفود کے مابین سوئیڈن کے دارالحکومت اسٹاک ہوم میں الحدیدہ کے لئے جنگ بندی معاہدہ پر دستخط ہوئے تھے مگر سعودی اتحاد نے اس معاہدے کے نفاذ کے ابتدائی گھنٹوں سے اسکی خلاف ورزی کرنا شروع کر دی تھی۔

الحدیدہ بندرگاہ یمن تک انسان دوستانہ امداد پہونچنے کے لئے سب سے اہم بندرگاہ شمار ہوتی ہے۔گزشتہ پانچ برسوں سے جاری جنگِ یمن کو روکنے کے لئے عالمی سطح پر کچھ اقدامات انجام دئے گئے ہیں تاہم جارح ممالک بالخصوص سعودی عرب نے ہر بار رکاوٹیں کھڑی کر کے انہیں ناکام بنا دیا۔

خیال رہے کہ یمن کو مارچ دوہزار پندرہ سے سعودی عرب کی بہیمانہ جارحیت کا سامنا ہے جس کے دوران اب تک دسیوں ہزار یمنی شہری شہید وزخمی اور دسیوں لاکھ دربدر اور بھکمری و بیماری سے روبرو ہو چکے ہیں۔

ٹیگز

متعلقہ مضامین

Back to top button
Close