پاکستان

کراچی میں رینجرز کی کارروائی، القاعدہ کراچی کے کمانڈر سمیت 2 دہشتگرد واصل جہنم افسر شہید

شہر قائد کے علاقے گلشن اقبال میں رات گئے رینجرز اورحساس اداروں نے کارروائی کی، جس کے دوران 2 دہشتگرد ہلاک اور 2 خواتین کو حراست میں لے لیا گیا، جبکہ فائرنگ کے تبادلے میں انٹیلی جنس ادارے کے اسسٹنٹ ڈائریکٹر شہید ہوگئے۔ ترجمان رینجرز کے مطابق حساس اداروں اور رینجرز نے گلشن اقبال کے علاقے 13 ڈی میں ایک فلیٹ پر دہشت گردوں کی موجودگی کی اطلاع پر کارروائی کی، جس کے دوران دہشت گردوں نے اہلکاروں پر فائرنگ شروع کر دی۔ فائرنگ کے تبادلے میں 2 دہشت گرد ہلاک اور حساس ادارے کے اسسٹنٹ ڈائریکٹر شہید، جبکہ ایک اہلکار زخمی بھی ہوا۔ رینجرز نے دہشت گردوں کے ساتھ فلیٹ میں مقیم 2 خواتین کو حراست میں لیتے ہوئے ان سے پوچھ گچھ شروع کر دی، جبکہ خواتین ہلاک ہونے والے دہشت گردوں کی بیویاں بتائی جاتی ہیں۔

ترجمان پولیس کے مطابق ہلاک دہشت گردوں کی شناخت عبدالاحد اور صالح کے نام سے ہوئی ہے، جبکہ حراست میں لی گئی 2 خواتین دہشت گردوں کی بیویاں ہیں، اور یہ خاندان 3 ماہ قبل گلشن اقبال میں شفٹ ہوا، تاہم حساس اداروں نے فلیٹ کے مالک کا پتا لگا لیا، جو اپارٹمنٹ کی یونین کا سابق صدر بھی ہے۔ پولیس کا کہنا ہے کہ ہلاک دہشت گرد دہشتگردی کا منصوبہ بنا رہے تھے، حراست میں لی گئی ان کی بیویوں سے تفتیشی عمل شروع کر دیا گیا ہے۔ اطلاعات کے مطابق ہلاک ہونے والے دہشتگردوں کا تعلق کالعدم دہشتگرد تنظیم القاعدہ سے تھا، دہشتگرد عبدالاحد کراچی میں القاعدہ کا کمانڈر تھا۔ رینجرز کی کارروائی میں ہلاک ہونے والے دہشتگردوں کے قبضے سے متنازعہ مذہبی لٹریچر اور اسلحہ بھی برآمد ہوا، جبکہ فلیٹ سے ایک موٹر سائیکل بھی تحویل میں لے لی گئی ہے۔ دہشتگردوں کی لاشوں کو پوسٹ مارٹم کیلئے اسپتال منتقل کر دیا گیا ہے۔

ٹیگز
Show More

متعلقہ مضامین

Back to top button
Close