دنیا

امریکہ اور یورپ میں کورونا کا قہر وحشت ناک شدت اختیار کرگیا

شیعت نیوز: امریکہ اور یورپ میں کورونا وائرس میں مبتلا افراد کی تعداد اور اموات میں وحشت ناک رفتار سے اضافہ ہورہا ہے ۔

امریکی میڈیا رپورٹوں کے مطابق پیر کی شام تک امریکہ میں کورونا وائرس سے مرنے والوں کی تعداد 3148 اور اس بیماری میں مبتلا افراد کی تعداد ایک لاکھ ترسٹھ ہزار چار سو اناسی ہوچکی تھی ۔

امریکہ اس وقت کورونا وائرس میں مبتلا افراد کی تعداد کے لحاظ سے پہلے نمبر پر ہے اور کورونا وائرس کے بحران کا مرکز شمار ہوتا ہے۔

یہ بھی پڑھیں : اٹلی میں کورونا وائرس سے 11 ہزار سے زائد افراد ہلاک

امریکی حکام نے خبر دار کیا ہے کہ امریکہ میں کورونا وائرس کے بحران کی وجہ سے بے روزگاری میں بھی وحشت ناک رفتار سے اضافہ ہورہا ہے ۔

امریکہ کے مرکزی بینک کے اعلان کے مطابق رواں سال کی دوسری سہ ماہی کے اختتام تک اس ملک میں چار کروڑ ستر لاکھ افراد بے روزگار ہوچکے ہوں گے۔

ادھر یورپ میں بھی میں وحشت ناک کورونا وائرس کا قہر جاری ہے اور اٹلی میں کورونا وائرس میں مبتلا افراد کی تعداد پیر کی رات تک ایک لاکھ سے تجاوز کرچکی تھی ۔

اطالوی حکومت نے کے اعلان کے مطابق پیر کی شام تک آٹھ سو بارہ نئی اموات کے بعد کورونا وائرس سے مرنے والوں کی تعداد گیارہ ہزار پانچ سو اکیانوے ہوچکی تھی۔

پیر کی شام تک فرانس میں بھی کورونا وائرس میں مبتلا افراد کی تعداد چوالیس ہزار پانچ سو پچاس اور مرنے والوں کی تعداد تین ہزار چوبیس ریکارڈ کی گئ تھی ۔

یہ بھی پڑھیں : دہشت گرد امریکی فوج کی نقل و حرکت پر ان کی نظریں ہیں۔ حزب اللہ عراق

یورپ میں اٹلی کے بعد اسپین کا نمبر آتا ہے جہاں کورونا وائرس میں مبتلاافراد کی تعداد ستاسی ہزار نو سو چھپین اور مرنے والوں کی تعداد سات ہزار سات سو سولہ ہوگئ تھی ۔

اس دوران فرانسیسی حکومت نے کورونا وائرس میں مبتلا بد حال افراد کو جرمنی اور سوئزر لینڈ منتقل کئے جانے کی بھی اطلاع دی ہے۔

یورو نیوز کے مطابق حکومت فرانس نے پیر کی شام کو اعلان کیا ہے کہ کورونا وائرس میں مبتلا اسّی بد حال افراد کو جرمنی اور سوئزر لینڈ کے اسپتالوں میں داخل کرایا گیا ہے۔

یہ ایسی حالت میں ہے کہ خود جرمنی میں کورونا وائرس میں مبتلا افراد کی تعداد سڑسٹھ ہزار سے تجاوز کرچکی ہے اور مرنے والوں کی تعداد ساڑھے چھے سو سے زیادہ ہوگئی ہے۔

یہ بھی پڑھیں : لاک ڈاؤن کے باوجود تبلیغی گروہوں کی سرگرمیاں جاری،اموات میں اضافہ

دوسری طرف برطانیہ کے رائل کالج آف فزیشینس کے سربراہ نے اینڈریو گوڈارڈ خبر دی ہے کہ ملک کے ایک چوتھائی ڈاکٹر اور ماہر افراد یا خود کورونا وائرس میں مبتلا ہوچکے پروفیسر اینڈریو گودارد نے اسکائی نیوز سے گفتگو میں بتایا ہے کہ کورونا وائرس کے بحران کے دوران ملک کے ایک چوتھائی ڈاکٹروں کے قرنطینہ میں چلے جانے سے اسپتال سخت دباؤ اور مشکلات سے دوچار ہیں ۔

انھوں نے بتایا کہ برطانیہ کے دیگر شہروں کے مقابلے میں لندن کی حالت زیادہ خراب ہے ۔ انھوں نے بتایا کہ برطانیہ میں نرسوں کی حالت بھی اچھی نہیں ہے۔

ٹیگز
Show More

متعلقہ مضامین

Back to top button
Close