مقبوضہ فلسطین

امریکہ و اسرائیل فلسطینی زمینیں ہڑپنیں کی کوشش میں ہیں ۔ صائب عریقات

شیعت نیوز: پی ایل او کے رہنما صائب عریقات نے صیہونی حکومت کو فلسطینی زمینیں ہڑپنیں اور علاقے کی سیکورٹی پر اس کے تباہ کن اثرات کے بارے میں خبردار کیا ہے۔

انہوں نے کہا ہے کہ امریکہ و غاصب صیہونی حکومت معاہدے کے آخری مرحلے کے موقع پر غرب اردن پر قبضہ کر کے اسے اسرائیل میں ضم کرنے کی کوشش کر رہی ہیں۔

پی ایل او کے ایگزیکٹیو کمیٹی کے سیکریٹری صائب عریقات نے لگسمبرگ کے وزیر خارجہ جان آسلبرن سے ملاقات میں یہودی کالونیوں کی تعمیر کی جانب اشارہ کیا اور کہا کہ اسرائیل نے یہودی کالونیوں کی تعمیر اور مسئلہ فلسطین سے متعلق اقوام متحدہ کی تمام قراردادوں کی خلاف ورزی کی ہے۔

یہ بھی پڑھیں : سعودی عرب میں فلسطینیوں کا ٹرائل باطل اور ظلم کی ایک مکروہ شکل ہے۔ حماس

صیہونی بستیوں کی تعمیر کو روکنے اور فلسطینی سرزمین کے دفاع سے متعلق پی ایل او کے قومی دفتر نے ایک رپورٹ جاری کرتے ہوئے کہا کہ امریکہ اور صیہونی حکومت دنیا بھر میں کورونا وائرس کے پھیلنے سے غلط استفادہ کرتے ہوئے سینچری ڈیل کے ناپاک منصوبے پرعمل در آمد کے دائرے میں فلسطینی اراضی کو اسرائیل میں ضم کرنے سے متعلق نقشے کو تبدیل کرنے کی کوشش کر رہی ہیں۔

پی ایل او نے اپنے ایک بیان میں بھی اعلان کیا ہے کہ امریکہ اور صیہونی حکومت کے درمیان غرب اردن میں فلسطینیوں کی زمینوں پر قبضہ کرنے اور اسے مقبوضہ فلسطین میں ضم کرنے کا سمجھوتہ اپنے آخری مرحلے میں ہے۔اس رپورٹ کے مطابق مذکورہ سمجھوتے کی بنیاد پر مقبوضہ فلسطین میں ضم ہونے والے علاقوں میں درہ اردن اور شمالی بحر المیت بھی شامل ہے۔

گذشتہ دنوں صیہونی حکومت کے وزیراعظم بن یامین نیتن یاہو نے حال ہی میں اعلان کیا تھا کہ بلیو اینڈ وائٹ جماعت کے ساتھ فلسطینی اراضی کو ضم کرنے پر اتفاق ہوا ہے اور کابینہ کی تشکیل کے بعد 6 ماہ میں اس پرعمل در آمد کیا جائیگا۔

ٹیگز

متعلقہ مضامین

Back to top button
Close