ایران

امریکا نہ تو مذاکرات مسلط کر سکتا ہے اور نہ ہی جنگ: حسن روحانی

اسلامی جمہوریہ ایران کے صدر مملکت ڈاکٹر حسن روحانی کا کہنا ہے کہ امریکا نہ تو ہم پر مذاکرات مسلط کر سکتا ہے اور نہ ہی جنگ۔

انہوں نے اقوام متحدہ کی جنرل اسمبلی کے اجلاس کو ویڈیو کانفرنس کے ذریعے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ آج وہ وقت آ گیا جب دنیا زور زبردستی اور غنڈہ گردی کو نو کہے۔

حسن روحانی نے کہا کہ تسلط پسندی اور خوف و ہراس پیدا کرنے کا زمانہ ختم ہو چکا ہے۔

صدر حسن روحانی نے کہا کہ سیکورٹی کونسل اور قرارداد 2231 کو غیر قانونی اور ہتھکنڈے کو طورپر استعمال کرنے کی امریکی کوششوں کو سیکورٹی کونسل نے دو بار نو کہہ دیا۔

انہوں نے کہا کہ پابندیوں کے ساتھ زندگی بسر کرنا سخت ہے لیکن بغیر خود مختاری کے زندگی اس سے بھی سخت ہے ۔

روحانی نے کہا کہ مغربی ایشیا میں سب سے قدیمی جمہوریت کے طور پر ایران اپنی ڈیموکریسی کو پروان چڑھا رہا ہے۔

صدر مملکت نے کہا کہ کچھ افراد انسانی حقوق کا دم بھرتے ہیں لیکن زیادہ سے زیادہ دباؤ کے ذریعے ایرانی عوام کے اقتصاد، صحت اور یہاں تک کے تمام ایرانیوں کے زندگی کے حق کو نشانہ بنا رہے ہیں۔

ٹیگز

متعلقہ مضامین

Back to top button
Close