دنیا

امریکی فوج کو مشرقِ وسطیٰ بھیجنا تاریخ کا بدترین فیصلہ تھا۔ امریکی صدر ٹرمپ

شیعت نیوز : امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ نے اعتراف کیا کہ امریکہ وسیع تباہی پھیلانے والے ہتھیاروں کی موجودگی کی غلط اطلاع پر عراق گیا۔

سوشل میڈیا پر جاری بیان میں امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ نے بالآخر اعتراف کیا کہ امریکی فوج کو مشرقِ وسطیٰ بھیجنا امریکی تاریخ کا بدترین فیصلہ تھا، غلط فیصلے کی وجہ سے ہزاروں امریکی فوجی ہلاک اور اسی کھرب ڈالر خرچ ہوئے، اب ان مضحکہ خیز جنگوں کے خاتمے کا وقت آگیا ہے۔

یہ بھی پڑھیں : امریکی صدر ٹرمپ نے مشترکہ ایٹمی معاہدے سے خارج ہوکربہت بڑی غلطی کی

ٹرمپ کا کہنا تھا کہ امریکہ کو مشرق وسطیٰ میں نہیں جانا چاہیے تھا، امریکہ نے مشرق وسطیٰ میں آٹھ ٹریلین ڈالرز خرچ کیے، ہزاروں امریکی اہلکار ہلاک اور زخمی ہوئے، دوسری طرف کے بھی لاکھوں لوگ مارے گئے۔

امریکی صدر کا مزید کہنا تھا کہ شام سے اپنے 50 فوجی اہلکاروں کو نکال لیا ہے، یورپ نے جن داعش جنگجوؤں کو واپس لینے سے انکار کیا ہے، ترکی ان پر قابو پائے، ہم اب اپنے فوجیوں کو محفوظ طریقے سے گھر واپس لا رہے ہیں۔

واضح رہے کہ زمینی حقایق کے پیش نظر امریکہ نے جن ممالک میں اپنی فوجیں بھیجی ہیں وہاں انھیں سخت ناکامی کا منہ دیکھنا پڑا ہے اور اب امریکہ ان ممالک سے اپنی شکست خوردہ افواج کو نکالنے اور اپنی شکست پر پردہ ڈالنے کی کوشش کر رہا ہے۔

ٹیگز
Show More

متعلقہ مضامین

Back to top button
Close