دنیا

امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ کا ایران پر نئے الزامات کا سلسلہ

شیعت نیوز: کورونا بحران کے دلدل میں پھنسے امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ نے خود کو نجات دلانے کے لئے اب ایران پر نئے الزامات کا سلسلہ شروع کر دیا ہے۔

ارنا نیوز کے مطابق امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ نے ایک بار پھر ٹوئیٹ کرتے ہوئے کوئی ثبوت فراہم کئے بغیر یہ دعوی کیا کہ ایران، عراق میں امریکی فوجیوں یا مراکز پر کسی بڑے حملے کا منصوبہ بنا رہا ہے۔ ٹرمپ نے حسب معمول یہ دھمکی دی کہ اگر ایران کی جانب سے اس طرح کا کوئی اقدام ہوتا ہے تو اسے بھاری قیمت چکانی پڑے گی۔

یہ بھی پڑھیں : امریکہ کی فوجی و سیاسی برتری کے زوال کا وقت آن پہنچا ہے۔ جنرل صفوی

امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ کا ٹوئیٹ ایسے حالات میں سامنے آیا ہے کہ حالیہ چند ہفتوں کے دوران عراق میں امریکی دہشت گردوں کی مشکوک سرگرمیاں بڑھ گئی ہیں۔

امریکی روزنامے نیویارک ٹائمز کی رپورٹ کے مطابق عراق میں موجود امریکی دہشت گرد فوجی وہاں کی عوامی رضاکار فورس حشد الشعبی کے مراکز پر حملے کرنے کا منصوبہ بندی کر رہے ہیں۔

یہ بھی پڑھیں : کورونا امریکہ میں تیزی سے سرایت کر گیا، ہلاکتوں کی تعداد 3860 ہو گئی

عراقی ذرائع کا بھی کہنا ہے کہ امریکہ ہر قیمت پرعراق کی حکومت اور عوام کے مطالبے کے برخلاف اقدامات کرنا چاہتا ہے اور وہ ملک میں اپنی موجودگی کے سخت مخالف استقامتی گروہوں کے مراکز پر حملہ کرنے کے درپے ہے۔

امریکہ کے دہشت گرد فوجی اب تک بارہا عراق کے مختلف علاقوں میں عراقی فورسز منجملہ رضاکار فورس حشد الشعبی کے مراکز پر بمباری کر چکے ہیں۔

واضح رہے کہ تین جنوری کو امریکی دہشت گردوں نے عراقی دارالحکومت بغداد کے ایئرپورٹ کے قریب سپاہ قدس کے کمانڈر جنرل قاسم سلیمانی اور عراق کی حشد الشعبی فورس کے ڈپٹی کمانڈر ابو مہدی المہندس کو ان کے ساتھیوں کے ہمراہ شہید کر دیا تھا جس کے ٹھیک دو روز بعد پانچ جنوری کو عراقی پارلیمنٹ نے ایک بل پاس کرتے ہوئے ملک سے امریکی دہشت گردوں کے فوری انخلا کا حکم جاری کردیا تھا۔

ٹیگز
Show More

متعلقہ مضامین

Back to top button
Close