عراق

بغداد میں امریکی سفارت خانے پر کاتیوشا راکٹوں کا حملہ

شیعت نیوز: عراق کے دارالحکومت بغداد میں امریکی سفارت خانے اور بین الاقوامی اتحاد کے فوجی اڈے کو 8 کاتیوشا راکٹوں کے ذریعے نشانہ بنایا گیا۔

تفصیلات کے مطابق اتوار کو علی الصبح بغداد کے مشرقی علاقوں زیونہ اور البلدیات میں زور دار دھماکے ہوئے۔ اس کے بعد دھوئیں کے بادل اٹھتے دکھائی دیے اور ایمبولینس کی گاڑیوں کی آوازیں بھی سنی گئیں۔

یہ بھی پڑھیں : حزب اللہ عراق کی امریکہ سے انتقام لینے پر تاکید

ذرائع نے واضح کیا کہ ان میں سے چار راکٹ جمیلہ اور الطالبیہ کے محلوں کے بیچ واقع علاقے سے داغے گئے۔ یہ علاقہ حرکت النجباء کے زیر کنٹرول ہے۔ ایک راکٹ زعفرانیہ کے علاقے سے داغا گیا جو بدر تنظیم نامی کے زیر کنٹرول علاقہ ہے۔ بقیہ تین راکٹ زیونہ کے علاقے سے داغے گئے۔ اس علاقے پر عصائب اہل الحق کا کنٹرول ہے۔

ذرائع نے مزید بتایا کہ امریکی سفارت خانے کے اطراف حملے کے چند منٹوں کے بعد ایک دوسرا راکٹ حملہ ہوا۔ اس حملے میں عینی شاہدین کے مطابق شارع فلسطین پر واقع حشد الشعبی کے لوجسٹک سپورٹ سینٹر کو نشانہ بنایا گیا۔ حملے کے بعد حشد الشعبی کے ارکان نے علاقے کو گھیرے میں لے لیا اور سرکاری سیکورٹی فورسز کو بھی آنے سے روک دیا۔

یہ بھی پڑھیں : نئے وزیراعظم امریکی افواج کے انخلاء کو جلد عملی جامہ پہنائیں، عراقی پارلیمنٹ

دوسری جانب بین الاقوامی اتحاد کے ترجمان نے اتوار کے روز ٹویٹر پر بتایا ہے کہ گرین زون میں ایک عراقی فوجی اڈے کو چھوٹے راکٹوں سے نشانہ بنایا گیا۔ یہ اڈہ بین الاقوامی اتحاد کی ٹیموں کی میزبانی انجام دیتا ہے۔

ترجمان کا کہنا ہے کہ یہ حملہ اتوار کی صبح مقامی وقت کے مطابق ٹھیک 3:24 پر ہوا۔ حملے میں کوئی جانی نقصان نہیں ہوا۔ مزید تفصیلات جاننے کے لیے تحقیقات کی جا رہی ہیں۔

یاد رہے کہ یہ پہلا موقع نہیں ہے جب گرین زون میں بالخصوص امریکی سفارت خانے کے اطراف راکٹ آ کر گرے ہیں۔ اس سلسلے میں آخری حملہ 20 جنوری کو ہوا تھا جب دارالحکومت بغداد کے حساس ترین علاقے کو 3 کاتیوشا راکٹوں کے ذریعے نشانہ بنایا گیا۔

ٹیگز

متعلقہ مضامین

Back to top button
Close