لبنان

بیروت سانحے کے حقائق برملا ہوں گے، صدر لبنان میشل عون

شیعت نیوز : صدر لبنان میشل عون نے بیروت دھماکے کا مقدمہ اس ملک کی عدالتی کونسل میں بھیجتے ہوئے کہا کہ بیروت دھماکے سے متعلق حقائق کو برملا کیا جائے گا۔

فارس خبر رساں ایجنسی کی رپورٹ کے مطابق صدر لبنان میشل عون نے ٹوئیٹ کرتے ہوئے کہا کہ وہ بیروت دھماکے سے متعلق حقائق کو برملا کرنے کی ہر ممکن کوشش کریں گے۔

لبنان کے صدر نے بیروت دھماکے کا مقدمہ اس ملک کی عدالتی کونسل میں بھیج دیا ہے۔

یہ بھی پڑھیں : امریکہ اور فرانس نے لبنان میں اپنی مداخلت شروع کردی

دوسری طرف لبنان کی عدالت نے کہا ہے کہ بیروت دھماکے کے الزام میں 20 افراد کو گرفتار کیا جا چکا ہے جن سے تحقیقات کا عمل جاری ہے۔

دوسری جانب لبنانی وزارت صحت کی جانب سے کئے جانے والے اعلان کے مطابق دارالحکومت بیروت کی بندرگاہ پر ہونے والے مہیب دھماکے کے نتیجے میں جانبحق ہونے والوں کی تعداد 160 ہو گئی ہے جبکہ 20 لوگ تاحال لاپتہ ہیں۔

قبل ازیں لبنانی وزارت صحت کی جانب سے کئے جانے والے بیان میں 60 افراد کے لاپتہ ہونے کا اعلان کیا گیا تھا۔

اس سلسلے میں برطانوی خبررساں ادارے بی بی سی نے لبنان کے میئر مروان عبود سے نقل کرتے ہوئے کہا ہے کہ بیروت دھماکے میں جانبحق ہونے والوں کی تعداد 200 سے بھی زائد ہے جبکہ میڈیا میں یہ تعداد انتہائی کم بتائی جا رہی ہے۔

یاد رہے کہ 4 اگست کو بیروت کی بندرگاہ کے ایک گودام میں رکھے 2 ہزار 700 ٹن آتش گیر مواد امونیم نائٹریٹ میں آگ لگنے کے سبب دھماکہ ہوا جس کے سبب اب تک 171 افراد جاں بحق ہو چکے ہیں جبکہ 6 ہزار سے زائد زخمی بتائے جاتے ہیں۔ اس ہولناک سانحے کے بعد ملک میں ہنگامے پھوٹ پڑے اور لبنان کی حکومت استعفیٰ دینے پر مجبور ہو گئی۔

بعض ماہرین کا کہنا ہے کہ اسرائیلی توپ خانے کی جانب سے مذکورہ گودام کو نشانہ بنایا گیا تھا جبکہ وقوعے کی بنائی گئی ویڈیوز میں سے ایک کے اندر بڑے دھماکے سے قبل جائے وقوعہ کی جانب جاتی گولہ مانند ایک اڑتی چیز کو بھی دیکھا جا سکتا ہے۔

ٹیگز

متعلقہ مضامین

Back to top button
Close