اہم ترین خبریںدنیا

بھارت میں پولیس اور انتہا پسند ہندوؤں کے حملوں میں 7 مسلمان شہید

شیعت نیوز: بھارت کے دارالحکومت دہلی میں امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ کے دورے کے موقع پر بھارتی پولیس اور انتہا پسند ہندوؤں کے بہیمانہ اور مجرمانہ حملوں میں 7 مسلمان شہید اور درجنوں زخمی ہوگئے ہیں۔

یہ بھی پڑھیں : بھارت کشمیرمیں اسی پالیسی پر عمل پیرا ہے جوفلسطین میں اسرائیل کی ہے ،علامہ حامد موسوی

رپورٹ کے مطابق بھارتی گجرات میں انتہا پسند ہندوؤں نے سوچے سمجھے منصوبے کے تحت دہلی میں متنازع شہریت قانون کے خلاف پرامن دھرنے پر بیٹھے مظاہرین پر دھاوا بول دیا جس کے نتیجے میں خوفناک فسادات پھوٹ پڑے۔

یہ بھی پڑھیں : مقبوضہ کشمیر میں کرفیو کے200روز مکمل، سربراہ ایم ڈبلیوایم علامہ راجہ ناصرعباس کا اظہار مذمت

دہلی میں جگہ جگہ اور گلی گلی ہنگامے چھڑ گئے۔ لوگوں کو روک روک کر ان کا مذہب پوچھا جانے لگا۔ بھارتی پولیس کی سرپرستی میں مسلمان مظاہرین پر بدترین تشدد کا سلسلہ جاری ہے۔

یہ بھی پڑھیں : امریکی صدرڈونلڈ ٹرمپ کے دورہ بھارت کے خلاف احتجاجی مظاہرے

ہنگاموں میں 7 افراد شہید اور درجنوں زخمی ہوگئے جبکہ سیکڑوں دکانیں اور املاک نذرآتش کردی گئیں۔

ان واقعات کی درجنوں ویڈیوز سوشل میڈیا پر سامنے آئیں جن میں دیکھا جاسکتا ہے کہ بھارتی پولیس کے سامنے چند لاشیں پڑی ہیں جبکہ پولیس اہلکار دم توڑتے مسلم نوجوانوں کو مارتے ہوئے ان سے جے شری رام کے نعرے لگانے کا مطالبہ کررہے ہیں۔

یہ بھی پڑھیں : مقبوضہ کشمیر میں قابض بھارتی فوج نے مزید 3 کشمیری نوجوانوں شہید کردیا

حملہ آور ہندوؤں نے مسلم مخالف متنازع قانون کے خلاف احتجاج کرنے والے افراد کا شامیانہ اکھاڑ پھینکا اور ببانگ دہل کہا کہ انہیں پولیس کی مدد حاصل ہے۔

ٹیگز
Show More

متعلقہ مضامین

Back to top button
Close