دنیا

بھارتی حکومت نے کشمیر حمایتی برطانوی رکن پارلیمنٹ کو ڈی پورٹ کردیا

شیعت نیوز: بھارت نے مقبوضہ جموں و کشمیر کے مظلوم عوام کے حق میں آواز اُٹھانے والی برطانوی رکن پارلیمنٹ ڈیبی ابراہمز کو اندرا گاندھی ایئر پورٹ سے ڈی پورٹ کر دیا۔

یہ بھی پڑھیں : سیکریٹری جنرل یو این انتونیو گوتریس مسئلہ کشمیر کےحل کیلئےموثرکرداراداکریں، علامہ ساجد نقوی

امیگریشن حکام نے بغیر کوئی وجہ بتائے لیبر پارٹی کی رُکن ڈیبی ابراہمز کو اکتوبر 2020 تک کا ویزا ہونے کے باوجود دہلی کے اندرا گاندھی ایئر پورٹ سے ڈی پورٹ کر دیا۔

ڈیبی ابراہمز مقبوضہ وادی پر بھارتی مظالم اور کشمیر کی خصوصی حیثیت ختم کرنے کے مودی سرکار کے فیصلے پر کڑی تنقید کی وجہ سے شہرت رکھتی ہیں۔ وہ آل پارٹی پارلیمینٹری گروپ فور کشمیر کی سربراہ بھی ہیں۔

یہ بھی پڑھیں : سعودی عرب کی مسئلہ فلسطین اور کشمیر کے بارے میں منافقانہ پالیسی جاری

ٹویٹ کے ذریعے انہوں نے بتایا کہ دہلی ایئر پورٹ پر امیگریشن حکام ان کے ساتھ انتہائی بدتمیزی کے ساتھ پیش آئے اور انہیں بتایا گیا کہ ویزہ منسوخ ہونے کی وجہ سے انہیں ڈی پورٹ کیا جا رہا ہے۔

انھوں نے کہا کہ وہ پہلے سے طے شدہ پروگرام کے تحت کشمیر کا دورہ کر کے وہاں کے لوگوں کی صورت حال کے بارے میں رپورٹ تیار کرنے والی تھیں۔

ڈیبی ابراہمز نے ویزہ منسوخی کا سبب جاننے کی کوشش کی تو انہیں کوئی جواب نہیں دیا گیا اور واپسی کے لیے زبردستی جہاز پر سوار کروا دیا گیا۔

برطانیہ میں کام کرنے والی مختلف کشمیری تنظمیوں نے اس بھارتی اقدام کی شدید مذمت کی ہے۔

گذشتہ برس اگست کے مہینے سے اب تک کسی بھی صحافی یا غیرملکی عہدیدار کو انفرادی طورپر اس علاقے کا دورہ نہیں کرنے دیا گیا ہے۔

ٹیگز
Show More

متعلقہ مضامین

Back to top button
Close