مقبوضہ فلسطین

کورونا وبا کی آڑ میں مسجد اقصیٰ پراسرائیلی خود مختاری کی کوشش خطرناک ہے

شیعت نیوز: فلسطین کے اسرائیلی امور کے ایک تجزیہ نگار اور دانشور نے خبردار کیا ہے کہ اسرائیلی ریاست کورونا وبا پھیلنے کی بنا پر مسجد اقصیٰ کی بندشوں کے ذریعے قبلہ اوّل اور پورے القدس پر اپنا تسلط جمانے کی کوشش خطرناک ہے۔

فلسطینی تجزیہ نگار صالح النعامی کا کہنا تھا کہ اسرائیل نے کورونا وبا کو مسجد اقصیٰ اور حرم قدسی پراپنے پنجے مضبوط بنانے کے لیے سازشیں اور حربے تیز کردیے ہیں۔

ٹویٹر پرپوسٹ کردہ متعدد ٹویٹس میں النعامی نے کہا کہ اسرائیل کی یہودی انتہا پسند گروپوں کے اتحاد ’’تنظیمات ہیکل‘‘ کے مشیر قانون افیعاد فیسولی مسجد اقصیٰ کی اراضی پرہیکل سلیمانی کی تعمیر کے اشتعال انگیزی دعوے کرتے ہیں۔ یہ سب کچھ ماہ صیام میں ہو رہا ہے اور کورونا وائرس کی پابندیوں نے اسرائیلی ریاست کو اپنے حربے اور ہتھکنڈے آگے بڑھانے کی راہ ہموار کی ہے۔

یہ بھی پڑھیں : صیہونی حکومت کا فلسطین کو یہودی رنگ دینے کی کوششوں پر حماس کا انتباہ

انہوں نے خبردار کیا کہ مسجد اقصیٰ کو کورونا وبا کی وجہ سے خالی چھوڑنا صیہونی انتہا پسند تنظیموں کو اپنے اشتعال انگیز جرائم کوآگے بڑھانے کا ماحول اور موقع فراہم کررہا ہے۔

دوسری جانب اسرائیلی حکومت نے کل بدھ کے روز کابینہ کے اجلاس میں مقبوضہ مغربی کنارے کے جنوبی علاقوں میں یہودی آباد کاروں کے لیے مزید 7 ہزار مکانات کی تعمیر کی منظوری دی ہے۔

عبرانی اخبار’’یروشلم پوسٹ‘‘ کی رپورٹ کے مطابق اسرائیلی وزیر دفاع نفتالی بینیٹ نے غرب اردن کے یہودی کالونیوں کے بلاک’’گوش عتصیون‘‘ میںقائم ’’افرات‘‘ کالونی میں یہودی آباد کاروں کے لیے سات ہزار نئے گھروں کی تعمیر کی منظوری دے دی ہے۔

خیال رہے کہ اسرائیلی حکومت جولائی سے غرب اردن کی کالونیوں کو صیہونی ریاست میں ضم کرنے کے اعلان پر عمل کرنے کی تیاری کررہی ہے۔ غرب اردن کے علاقوں کو صیہونی ریاست میں ضم کرنے کا فارمولہ امریکہ نے پیش کیا ہے اور وہ فلسطینی علاقوں پر اسرائیلی ریاست کی خود مختاری کے لیے سرگرم ہے۔

اقوام متحدہ کی سلامتی کونسل اور جنرل اسمبلی کی کئی قراردادوں، اقوام متحدہ کے انسانی حقوق چارٹر اور دیگر عالمی کنونشنز میں مقبوضہ فلسطینی علاقوں میں اسرائیل کی یہودی بستیوں کی تعمیر کو غیرقانونی اور غیرآئینی قرار دیا گیا ہے۔

سلامتی کونسل نے 23 دسمبر 2017ء کو قرارداد 2334 منظور کی تھی جس میں فلسطینی علاقوں میں یہودی بستیوں کی تعمیر اور توسیع پسندانہ اقدامات کو غیرقانونی قرار دیا گیا تھا۔

ٹیگز

متعلقہ مضامین

Back to top button
Close