دنیا

دنیا بھر میں انسانی حقوق کی عالمی تنظیموں کا کشمیریوں کے ساتھ یکجہتی کا اظہار

شیعت نیوز :دنیا بھر میں انسانی حقوق کی عالمی تنظیموں نے 5 اگست کو کشمیر کی خصوصی حیثیت ختم کرنے کے غیرقانونی اقدام کو ایک سال مکمل ہونے پر کشمیریوں سے اظہار یکجہتی کے لیے مظاہروں اور ریلیوں کے انعقاد کا اعلان کیا ہے۔

اطلاعات کے مطابق دنیا بھر میں سیاہ فام امریکیوں، فلسطینیوں، ایغور اور روہنگیا افراد کے حقوق کے لیے کام کرنے والی سماجی تنظیموں نے بھارت کی ہندو انتہا پسند حکومت کے خلاف مقبوضہ جموں و کشمیر کے عوام کی جدوجہد کے ساتھ اظہارِ یکجہتی کا اعلان کیا ہے۔

مختلف ممالک میں بھارتی قونصل خانوں کے باہر احتجاج کرکے مقبوضہ کشمیر پر بھارت کی جانب سے عائد کردہ پابندیاں ختم کرنے کا مطالبہ کیا گيا ہے۔

یہ بھی پڑھیں : پاکستان بھر میں کشمیریوں سے اظہار یکجہتی کے لیے آج ’’ یوم استحصال ‘‘ منایا

انسانی حقوق کی عالمی تنظیموں کی جانب سے عالمی سطح پر مودی سرکار کی جانب سے کیے گئے 5 اگست کے غیر قانونی اقدام کے خلاف مظاہرے اور سیمینارز وغیرہ منعقد کیے جائیں گے۔

علاوہ ازیں کشمیریوں سے اظہار یک جہتی کےلیے اقوام متحدہ کے گرد ڈیجیٹل انسانی زنجیر بھی بنائی جائے گی۔

واضح رہے کہ 5 اگست 2019 کو بھارت کی مودی سرکار نے یک طرفہ طور پر مقبوضہ کشمیر کی خصوصی حیثیت ختم کرنے کے لیے آئین کے آرٹیکل 370 کو ختم کرنے کا غیر آئینی اور متنازع قدم اٹھایا تھا جسے ایک برس مکمل ہوچکا ہے۔

دوسری جانب چینی حکام کا کہنا ہے کہ کشمیر کی حیثیت میں کوئی بھی یکطرفہ تبدیلی غیر قانونی اور غیر مؤثر ہے۔

ترجمان چینی وزارت خارجہ نے بیجنگ میں پریس کانفرنس کرتے ہوئے کہا ہے کہ کشمیرکے معاملے میں چین کا مؤقف واضح اور اپنی جگہ برقرار ہے، مسئلہ کشمیر پاکستان اور بھارت کے درمیان تاریخ کا چھوڑا ہوا مسئلہ ہے۔

ترجمان کا کہنا تھا کہ چین کشمیر کے علاقے کی صورت حال کا بغور جائزہ لیتا ہے، بھارت کا جموں کشمیر کی خصوصی حیثیت کا آرٹیکل 370 ختم کرنا غیرقانونی ہے۔

چینی وزارت خارجہ کے ترجمان کا کہنا تھا کہ پاکستان اور بھارت کے درمیان اقوام متحدہ کی سلامتی کونسل کی قراردادوں کے تحت معاہدہ موجود ہے، مسئلہ کشمیر فریقین کے درمیان بات چیت اور پرامن طریقے سے حل ہونا چاہیے۔ ترجمان کا مزید کہنا تھا کہ پاکستان اور بھارت پڑوسی ہیں ایک دوسرے سے الگ نہیں ہوسکتے۔

ٹیگز

متعلقہ مضامین

Back to top button
Close