دنیا

یورپی ممالک کا اسرائیلی وزیر اعظم نیتن یاہو کو سخت انتباہ

شیعت نیوز: یورپی ممالک نے اسرائیلی وزیر اعظم نیتن یاہو کو خبردار کیا ہے کہ غرب اردن کی اسرائیل میں الحاق جیسے خطرناک اقدامات سے پرہیز کرے۔

فرانس، برطانیہ، اٹلی اور اسپین کے سربراہوں نے اسرائیلی وزیر اعظم نیتن یاہو کو خبردار کیا ہے کہ وہ غرب اردن کے حصے کے اسرائیل میں الحاق کے منصوبے کو ترک کردیں کیونکہ اس کے بہت ہی خطرناک نتائج برآمد ہوں گے۔

اسرائیل کے چینل-13 کی رپورٹ کے مطابق فرانس کے صدر ایمانوئیل میکرون نے نیتن یاہو کو مخاطب کرتے ہوئے ہر طرح کے یکطرفہ فیصلے سے پرہیز کرنے کی درخواست کی ہے۔ میکرون کا کہنا تھا کہ ویسٹ بینک کے حصے کے اسرائیل میں الحاق کے مغربی ایشیا کے امن و استحکام پر منفی اثرات مرتب ہوں گے۔

برطانیہ کے وزیر اعظم نے بھی اسرائیلی وزیر اعظم نیتن یاہو سے ایسے اقدامات نہ کرنے کی اپیل کی ہے۔

یہ بھی پڑھیں : استقامتی محاذ مستقبل قریب میں اسرائیل کی مکمل تباہی کا باعث بنے گا۔ آئزک برک

در ایں اثنا اسپین کے وزیر اعظم نے ایک پیغام بھیج کر نیتن یاہو سے عالمی قوانین کا احترام کرنے اور اقوام متحدہ کی قراردادوں کے نفاذ کا مطالبہ کیا ہے۔

ادھر فرانس کے وزیر خارجہ نے کہا کہ اسرائیل میں غرب اردن کے الحاق کے اقدامات پر بے شک شدید رد عمل آ سکتا ہے۔

فرانس کے وزیر خارجہ کا کہنا ہے کہ غرب اردن کے اسرائیل میں الحاق کے خطرناک نتائج برآمد ہوں گے۔

ان کا کہنا تھا کہ اسرائیل کا یہ فیصلہ بالکل غلط ہے۔ امریکہ کی کھلی حمایت کی وجہ سے اسرائیل، فلسطین کے دوسرے حصے کو بھی باضابطہ خود میں ملحق کرنے کے درپئے ہے۔

رپورٹ میں بتایا گیا ہے کہ نیتن یاہو اس منصوبے کو جولائی میں صیہونی پارلیمنٹ میں پیش کر سکتے ہیں۔

صیہونی حکومت کے اس فیصلے سے اب تک عالمی سطح پر شدید رد عمل سامنے آ رہے ہیں۔

واضح رہے کہ صیہونی حکومت کی جانب سے اعلان کیا گیا ہے کہ وہ جولائی 2020 سے غرب اردن کے کچھ حصوں کے اسرائیل میں الحاق کا آغاز شروع کرے گا۔

ٹیگز

متعلقہ مضامین

Back to top button
Close