دنیا

یورپی یونین کا جوہری معاہدے کے حوالے سے اپنی کمزوری کا اعتراف

شیعت نیوز: یورپی یونین کے خارجہ پالیسی چیف نے ایران کے ساتھ ہونے والے ایٹمی معاہدے کے بارے میں یورپ کے کمزور موقف پر کڑی نکتہ چینی کی ہے۔

میونیخ سیکورٹی کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے یورپی یونین کے خارجہ پالیسی چیف جوزف بورل کا کہنا تھا کہ ہم ایٹمی معاہدے کے حوالے سے اپنے وعدے پورے کرنے میں ناکام رہے ہیں۔

یہ بھی پڑھیں : یورپ نے بھی عراق کے داخلی امور میں کھلی مداخلت شروع کردی

انہوں نے اس بات کا بھی اعتراف کیا کہ ایران کے لیے قائم کیا جانے والا خصوصی مالیاتی نظام انسٹیکس بھی سودمند واقع نہیں ہوسکا ہے۔

یورپی یونین کے خارجہ پالیسی چیف نے کہا کہ یورپ کی نگاہ میں جامع ایٹمی معاہدہ ابھی ختم نہیں ہوا۔

یہ بھی پڑھیں : امریکی صدر ٹرمپ نے مشترکہ ایٹمی معاہدے سے خارج ہوکربہت بڑی غلطی کی

انہوں نے یورپ اور امریکہ کے درمیان پائے جانے والے اختلافات کی جانب اشارہ کرتے ہوئے کہا کہ صدر ڈونلڈ ٹرمپ اس ایٹمی معاہدے کو ختم کرنے خواہاں ہیں جس پر ان کے پیشرو صدر باراک اوباما نے دستخط کیے تھے۔

جوزف بورل نے کہا کہ اگرچہ امریکہ ایران کے خلاف زیادہ سے دباؤ کی پالیسی پر عملدرآمد کا مطالبہ کر رہا ہے تاہم یورپ کو ہرگز ایساں نہیں سوچنا چاہیے۔

یہ بھی پڑھیں : ایرانی قوم امریکہ کے مقابلے میں آخری دم تک ڈٹی رہے گی۔ آیت اللہ خامنہ ای

یورپی یونین کے خارجہ پالیسی چیف نے اپنے خطاب میں یورپ کی امریکہ کے ساتھ وابستگی کی جانب بھی اشارہ کیا۔

قابل ذکر ہے کہ ایران نے ایٹمی معاہدے سے امریکہ کی غیر قانونی علیحدگی اور یورپ کی جانب سے اپنے وعدوں کی تکمیل میں ناکامی کے ایک سال کے بعد آٹھ مئی دوہزار انیس کو ایٹمی معاہدے پر عملدرآمد کی سطح میں کمی کا آغاز کیا تھا جو اب مکمل ہوچکا ہے۔

ٹیگز
Show More

متعلقہ مضامین

Back to top button
Close