مقبوضہ فلسطین

غرب اردن میں اسرائیلی فوج پر حملے پر قوم کو مبارک باد۔ فلسطینی مزاحمتی تنظیمیں

شیعت نیوز: فلسطینی مزاحمتی تنظیموں حماس اور جہاد اسلامی فلسطین نے اعلان کیا ہے کہ غرب اردن کا علاقہ بارود کے ڈھیر میں تبدیل ہو چکا ہے۔

فلسطینی مزاحمتی تحریک حماس نے غرب اردن کے علاقے جنین میں یعبد کے مقام پر گذشتہ روز ایک مزاحمتی حملے میں اسرائیلی فوجی کی ہلاکت پر قوم اور مزاحمتی قوتوں کو مبارک باد پیش کی ہے۔

رپورٹ کے مطابق حماس کی طرف سے جاری ایک بیان میں کہا گیا ہے کہ جنین میں پیش آنے والا واقعہ صیہونی ریاست کی نہتے فلسطینیوں کے خلاف ریاستی دہشت گردی کا فطری رد عمل ہے۔ اسرائیلی فوجیوں کو نہتے فلسطینیوں کےگھروں میں گھس کر انہیں زدو کوب کرنے اور فلسطینیوں کے خلاف ریاستی دہشت گردی کی سزا ہے۔

یہ بھی پڑھیں : جنین میں فلسطینیوں کی سنگ باری سے ایک اسرائیلی فوجی ہلاک

فلسطینی مزاحمتی تحریک حماس نے غرب اردن کے نوجوانوں پر زوردیا ہے کہ وہ قابض صیہونی فوج کے خلاف تمام ممکنہ وسائل سے مزاحمت کا سلسلہ جاری رکھیں۔

بیان میں کہا گیا ہے کہ فلسطینی شہری بندوق، پٹرول بموں اور پتھر سمیت جو چیز دستیاب ہے اسے قابض اور غاصب فوج کے خلاف استعمال کریں۔

جہاد اسلامی فلسطین کے ترجمان مصعب البریم نے فلسطینیوں کی اس کاروائی کو، غرب اردن کے علاقوں کو مقبوضہ علاقوں میں شامل کرنے کی صیہونی سازش پر فلسطینیوں کا کھلا پیغام قرار دیا۔

البریم نے کہا ہے کہ فلسطینیوں کی صیہونی مخالف یہ کاروائی اس بات پر تاکید ہے کہ غرب اردن کی موجودہ میدانی و سیکورٹی کی صورت حال کے باوجود فلسطینی قوم کے مقابلے میں غاصب صیہونی حکومت بالکل بے بس و ناتواں ہے جبکہ فلسطینیوں کے پاس کوئی ہتھیار تک نہیں ہے اور وہ پتھروں سے جارح صیہونی فوج کا مقابلہ کر رہے ہیں۔

جہاد اسلامی فلسطین کے ترجمان نے کہا کہ صیہونی مخالف یہ کاروائی، غاصب صیہونی فوجیوں کی جارحیت کا جواب تھا۔

خیال رہے کہ گذشتہ روز جنین میں فلسطینی شہریوں نے اسرائیلی فوجیوں پر سنگ باری کی جس کے نتیجے میں کم سے کم ایک اسرائیلی فوجی واصل جہنم ہوگیا۔

دریں اثنا اطلاعات ہیں کہ نور جابر البرغوثی کے جلوس جنازہ میں دسیوں ہزار فلسطینیوں نے شرکت کی جو غاصب صیہونی حکومت کی ایک جیل میں بیماری اور طبی سہولیات فراہم نہ کئے جانے کے نتیجے میں شہید ہو گئے تھے۔

ٹیگز

متعلقہ مضامین

Back to top button
Close