مقبوضہ فلسطین

غزہ میں کورونا وائرس کے پیشگی اقدامات، 14 قرنطینہ سینٹر قائم

شیعت نیوز: فلسطین کے علاقے غزہ کی پٹی میں حکام نے کورونا کے بڑھتے خطرے کے پیش نظر پیشگی حفاظتی اقدامات شروع کیے ہیں۔ اس ضمن میں حکومت نے غزہ میں 14 قرنطینہ سینٹر قائم کئے گئے ہیں۔ شہریوں کی اسکریننگ کا سلسلہ جاری ہے اور تمام ضروری طبی آلات اور ضروری سامان فراہم کردیے گئے ہیں۔

غزہ میں حکومت کی طرف سے جاری کردہ ایک بیان میں بتایا گیا ہے کہ غزہ کی پٹی میں قرنطینہ سینٹر قائم کیے گئے ہیں تاکہ کسی قسم کی مشکل اور ہنگامی حالت میں شہریوں کو طبی مدد فراہم کی جا سکی۔

فلسطینی حکام کا کہنا ہے کہ غزہ کی پٹی میں اب تک کورونا کا کوئی مریض نہیں اور غزہ کا علاقہ اس وائرس سے محفوظ ہے۔ حکام نے غزہ میں کورونا وائرس پھیلانے والوں سے سختی سے نمٹا جائے گا۔

یہ بھی پڑھیں : سعودی عرب کی جیلوں میں فلسطینی اسیروں کے کورونا کا شکار ہونے کاانکشاف

دوسری طرف انسانی حقوق کی عالمی تنظیموں کی طرف سے فلسطین کے محاصرہ زدہ علاقے غزہ کی پٹی کے عوام کو کورونا سے بچانے کے لیے مقامی انتظامیہ کو طبی آلات اور ادویات کی فراہمی کا مطالبہ کیا گیا ہے۔

رپورٹ کے مطابق غزہ کی پٹی میں انسانی حقوق کے لیے کام کرنے والے درجنوں اداروں کی طرف سے گذشتہ روز ایک متفقہ بیان جاری کیا گیا جس میں عالمی برادری سے مطالبہ کیا گیا کہ وہ کورونا وائرس کے خطرے کے پیش نظر غزہ کی پٹی کی انتظامیہ کو طبی آلات اور ادویات فراہم کرے۔

انسانی حقوق کی تنظیموں کا کہنا ہے کہ اسرائیل کی طرف سے غزہ کی پٹی کی مسلسل ناکہ بندی کرونا وائرس جیسے امراض کے پھیلنے کا ذریعہ ثابت ہوسکتی ہے۔ ہمارا پر زور مطالبہ ہے کہ انسانی حقوق کی تنظیمیں اور عالمی برادری غزہ کی انتظامیہ کو کرونا سے بچاؤ کے لیے تمام ضروری سامان ،آلات اور ادویات کی فراہمی یقینی بنائے۔

انسانی حقوق کی تنظیموں کی طرف سے مرکز برائے تحفظ انسانی حقوق کے ڈائریکٹر عمر القاروط نے کہا کہ غزہ کے عوام کو کورونا کی وباء سے بچانے کے لیے ہرقسم کے آلات اور سہولیات فراہم کرنا عالمی برادری کی ذمہ داری ہے۔

ٹیگز

متعلقہ مضامین

Back to top button
Close