اہم ترین خبریںمقبوضہ فلسطین

غزہ پر اسرائیلی حملہ، جہاد اسلامی فلسطین کے مرکز پر بمباری

شیعت نیوز: اسرائیلی فوج نے دعویٰ کیا ہے کہ اس نے غزہ کی پٹی میں ایک مزاحمتی تحریک جہاد اسلامی فلسطین کے مرکز کو نشانہ بنایا ہے۔

تفصیلات کے مطابق اسرائیلی فوج کی طرف سے جاری ہونیوالے بیان میں کہا گیا ہے کہ غزہ کی پٹی میں واقع فلسطینی مزاحمتی تحریک ’’حرکۃ الجہاد الاسلامی لفلسطین‘‘ کے مرکز کو اسرائیلی جنگی طیاروں کے ذریعے نشانہ بنایا گیا ہے۔

یہ بھی پڑھیں : سعودی عرب نے جیش العدل دہشت گردوں کو اسلحہ ، سازو سامان فراہم کئے۔ محمد پاکپور

غاصب صیہونی فوج نے دعویٰ کیا ہے کہ جہاد اسلامی فلسطین کے اسنائپرز نے سرحد پار سے اسرائیلی فوجیوں پر حملہ کیا تھا، جس کے جواب میں اسرائیل نے ان کے ایک مرکز کو ہوائی حملے کا نشانہ بنایا ہے۔

اسرائیلی اخبار یروشلم پوسٹ نے بھی اس کے بارے میں اطلاع دیتے ہوئے یہی دعویٰ کیا ہے کہ جہاد اسلامی فلسطین کے مزاحمت کاروں نے اسنائپر کے ذریعے اسرائیلی فوجیوں کو نشانہ بنایا، جس کے جواب میں فلسطینی شہر خان یونس میں واقع جہاد اسلامی فلسطین کے ایک مرکز پر حملہ کیا گیا ہے، تاہم کوئی جانی و مالی نقصان نہیں پہنچا ۔

یہ بھی پڑھیں : آل سعود حکومت فلسطین کی بربادی میں امریکہ و اسرائیل کے ساتھ برابر کی شریک ہے۔

قبل ازیں اسرائیلی وزیراعظم بنجمن نیتن یاہو فلسطینی مزاحمتی رہنماؤں کے خلاف بارہا یہ بیان دے چکے ہیں کہ ان کے خلاف حیران کن کارروائیاں کی جائیں گی۔

واضح رہے کہ غزہ کی پٹی اسرائیلی زمینی و سمندری محاصرے کے اندر موجود کم رقبے کا ایک چھوٹا سا گنجان آباد علاقہ ہے، جس میں 20 لاکھ سے زائد فلسطینی زندگی گزارنے پر مجبور ہیں، جس کو سابق برطانوی وزیراعظم ڈیوڈ کیمرون کی طرف سے ’’بغیر چھت کے جیل‘‘ بھی قرار دیا جا چکا ہے۔

ٹیگز

متعلقہ مضامین

Back to top button
Close