مقبوضہ فلسطین

غزہ پر مسلسل صیہونی بمباری ننگی جارحیت ہے۔ حازم قاسم

شیعت نیوز : اسلامی مزاحمتی تحریک حماس نے غزہ کی پٹی پر اسرائیلی فوج کے جنگی طیاروں کی وحشیانہ بمباری کی مسلسل بمباری کو فلسطینی قوم کے خلاف ننگی جارحیت قرار دیا ہے۔

تفصیلات کے مطابق حماس کے ترجمان حازم قاسم نے کہا کہ غزہ کی پٹی پر مسلسل بمباری القدس، غزہ اور غرب اردن کے عوام کے خلاف ننگی جارحیت ہے۔

انہوں نے کہا کہ غزہ کی پٹی کی مسلسل 14 سال سے جاری ناکہ بندی بھی جارحیت کی ایک شکل ہے۔

ترجمان کا کہنا تھا کہ اسرائیلی حکومت اپنی ناکامی پر پردہ ڈالنے کے لیے اپنے داخلی بحران کو غزہ کی پٹی میں منتقل کرنے کی کوشش کررہی ہے۔ تاہم حماس صہیونی دشمن کی ہرسازش کا مقابلہ کرنے کی پوری صلاحیت موجود ہے۔

یہ بھی پڑھیں : اسرائیلی فوج کی بربریت، گھر میں گھس کر شیر خوار بچے کی ماں کو شہید کر دیا

خیال رہے کہ گذشتہ روز اسرائیلی فوج کے جنگی طیاروں نے غزہ کی پٹی میں متعدد اہداف پر بمباری کی جس کے نتیجے میں متعدد املاک کو نقصان پہنچا۔

دوسری جانب اسرائیلی فوجیوں نے جمعے کو غرب اردن کے شہر جنین پر حملہ کرکے فلسطینیوں کو زدوکوب کیا اور ایک فلسطینی نوجوان کو گولی مار کر زخمی کردیا۔

المیادین ٹی وی کی رپورٹ کے مطابق فلسطینی نوجوان کے سینے پر گولی ماری گئی ہے اور اس کی حالت تشویشناک ہے۔

اسرائیلی فوجیوں نے اس ایمبولینس پر بھی فائرنگ کی جو جائے واقعہ کی جانب جا رہی تھی۔

صیہونی ، اپنے توسیع پسندانہ اہداف کے حصول کے لئے ہر روز ہی فلسطین کے مختلف علاقوں پر حملے کرتے ہیں اور بےبنیاد الزامات کے تحت انھیں گرفتار کرلیتے ہیں ۔

اس وقت پانچ ہزار سات سو فلسطینی صیہونی جیلوں میں قید ہیں جن میں سے دوسوپچاس بچے اور سینتالیس خواتین ہیں۔

اسرائیلی پولیس نے مسجد اقصیٰ کے محافظ مھند الانصاری کے مسجد اقصیٰ میں داخل ہونے پر چار ماہ کی پابندی کا پروانہ اسکے ہاتھ میں تھمایا۔

اسرائیلی پولیس نے الانصاری کو ایک ہفتہ پہلے مسجد اقصیٰ سے گرفتار کیا اور اسے القشلہ حراستی مرکز منتقل کر دیا ۔الانصاری کو چار ماہ کی پابندی ختم ہونے کے بعد اسی حراستی مرکز میں اسرائیلی پولیس کے سامنے حاضر ہونے کا حکم دیا گیا۔

ٹیگز

متعلقہ مضامین

Back to top button
Close