مقبوضہ فلسطین

حماس نے کشنر اور ٹونی بلیئر سے ملاقات کی درخواست مسترد کر دی

فلسطین کی تحریک فتح کی ایکزیکٹیو کمیٹی کے سیکریٹری نے اعلان کیا ہے کہ تحریک حماس نے امریکی صدر کے مشیر اور برطانیہ کے سابق وزیر اعظم کی ملاقات کی درخواست مسترد کر دی۔

روزنامہ العربی الجدید نے تحریک فتح کی ایگزیکٹیو کمیٹی کے سکریٹری جبرائیل الرجوب کے حوالے سے لکھا ہے کہ امریکی صدر کے مشیر جراڈ کوشنر اور سابق برطانوی وزیراعظم ٹونی بلیئر نے حماس کے رہنماؤں سے ملاقات کی درخواست کی تھی تاہم تحریک حماس کے رہنماؤں نے ملاقات سے انکار کر دیا تھا۔

یہ درخواست فلسطینی انتظامیہ کی جانب سے مئی دوہزار بیس میں امریکی حکومت اور صیہونی حکومت کے سینچری ڈیل نامی نسل پرستانہ منصوبے کو تسلیم نہ کرنے کے فیصلے کے بعد کی گئی تھی۔

درایں اثنا تحریک فتح کی ایگزیکٹیو کمیٹی کے سیکریٹری نے کہا ہے کہ عوامی استقامت ، خودمختار فلسطینی ملک کے قیام اور محمود عباس کو ملت فلسطین کا رہنما تسلیم کرنے جیسے معاملات پر حماس کے ساتھ اتفاق ہو گیا ہے۔

امریکی حکومت نے اٹھائیس جنوری دو ہزار بیس کو وائٹ ہاؤس میں صیہونی وزیر اعظم نتن یاہو اور چند عرب ملکوں کے سفیروں کی موجودگی میں سینچری ڈیل منصوبے کا اعلان کیا تھا جس کے بعد فلسطینی انتظامیہ نے امریکہ کے ساتھ اپنے تمام تعلقات ختم کر لئے۔

ٹیگز

متعلقہ مضامین

Back to top button
Close