عراق

حشد الشعبی کا صوبہ نینوا میں داعشی دہشت گردوں کے خلاف وسیع آپریشن

شیعت نیوز : عراقی عوامی مزاحمتی فورس حشد الشعبی اور سرکاری فوج کی جانب سے صوبہ نینوا میں بین الاقوامی دہشت گرد تنظیم داعش کے خلاف ایک وسیع آپریشن کا آغاز کر دیا گیا ہے۔

عوامی مزاحمتی فورس حشد الشبعی کی ویب سائٹ کے مطابق یہ مشترکہ و وسیع آپریشن عراق کے صوبہ نینوا میں شروع کیا گیا ہے جبکہ جزیرہ الحضر اور وادی الثرثار سے اس کا باقاعدہ آغاز ہو چکا ہے۔

رپورٹ کے مطابق اس وسیع آپریشن میں حشد الشعبی کے لشکر 44 و 21 اور فوج کے لشکر 43 سمیت مختلف سکیورٹی فورسز کے اہلکاروں کی ایک بڑی تعداد حصہ لے رہی ہے۔

یہ بھی پڑھیں : شکارپور، مسجد امام حسن ؑ پرکالعدم سپاہ صحابہ اور جےیوآئی(ف)کےقبضےکی کوشش ناکام

عوامی مزاحمتی فورس حشد الشعبی کے نینوا کے کمانڈر خضیر المطروحی نے اس حوالے سے تاکید کرتے ہوئے کہا ہے کہ یہ صوبہ امن و امان کے لحاظ سے مستحکم ہے اور کسی قسم کی پریشانی موجود نہیں۔

المطروحی نے کہا کہ ہم موصل آئے ہیں تاکہ کسی بھی قسم کے امتیازی سلوک اور فرقہ وارانہ تعصب سے ہٹ کر صرف اور صرف امن و امان کو بحال کر کے عوام کی خدمت کریں۔

یہ بھی پڑھیں : عراق کی مسلح افواج کا امریکی فوجیوں کے انخلا پر زور

انہوں نے اس بات کی جانب اشارہ کرتے ہوئے کہ صوبہ نینوا میں حشد الشعبی کی اعلی کمان اور عراقی فوجی قیادت کے درمیان اعلی درجے کی ہم آہنگی موجود ہے، زور دیتے ہوئے کہا کہ ہم نہیں چاہتے کہ پورے علاقے کو فوجی رنگ دے دیں بلکہ ہمارا مقصد پناہ گزینوں کی واپسی اور ان کو مدد پہنچانا ہے۔

واضح رہے کہ اس سے قبل صوبہ دیالہ میں داعش کے خلاف آپریشن کے دوران 70 سے زائد گاؤں اور دیہی علاقوں کو دہشت گرد گروہ داعش کے وجود سے پاک کر دیا گیا تھا۔

ٹیگز

متعلقہ مضامین

Back to top button
Close