اہم ترین خبریںایران

حکومت بحرین کو اسرائیل کے بجائے عوام کے ساتھ تعلقات کو مضبوط کرنا چاہیے۔ ایران

شیعت نیوز : اسلامی جمہوریہ ایران کی پارلیمنٹ کے اسپیکر کے بین الاقوامی امور کے مشیر حسین امیر عبداللہیان نے اپنے ایک ٹوئیٹربین میں بحرینی حکومت مخالف دو نوجوانوں کی سزائے موت پر نکتہ چینی کرتے ہوئے کہا کہ کورونا وائرس کے سائے میں دو بحرینی نوجوانوں کی سزائے موت اس بات کا ثبوت ہے کہ حکومت بحرین اور عوام کے درمیان گہرا شگاف پیدا ہو گیا ہے۔

آئی آر آئی بی کی رپورٹ کے مطابق اسلامی جمہوریہ ایران کی پارلیمنٹ میں بین الاقوامی امور کے مشیر حسین امیر عبد اللہیان نے اپنے ایک ٹوئیٹر پیغام میں حکومت بحرین کی طرف سے انسانی حقوق کو پامال کرنے کی شدید مذمت کی۔

یہ بھی پڑھیں : شہید سلیمانی کی ٹارگٹ کلنگ سے متعلق تمام دستاویزات عدالت کے سپرد کر دی ہیں۔

انہوں نے کہا ہے کہ بحرین میں آل خلیفہ حکومت کو اسرائیل کی جعلی حکومت کے ساتھ تعلقات مضبوط بنانے کے بجائے بحرینی عوام کے ساتھ تعلقات کی اصلاح کرنی چاہیے۔

حسین امیر عبداللہیان نے کہا کہ حکومت بحرین کو اسرائیل کے ساتھ تعلقات مضبوط بنانے کے بجائے بحرینی عوام کے ساتھ تعلقات کو محکم کرنا چاہیے۔ ظلم و ظالم کا خاتمہ یقینی ہے۔

واضح رہے کہ پیر کے روز بحرین کی عدالت نے حکومت مخالف 2 بحرینی نوجوانوں کی سزائے موت کی تائید کر دی ہے۔

بحرین میں آل خلیفہ حکومت کی نمائشی عدالت نے ہمیشہ بحرینی انقلابیوں کو بے بنیاد الزامات کے تحت موت، شہریت منسوخ کر دینے یا پھر طویل المیعاد قید کی سزا سنائی ہے اور یہ سلسلہ بدستور جاری ہے۔

انسانی حقوق کی بین الاقوامی تنطیمیں سیاسی اور سماجی کارکنوں کے خلاف آل خلیفہ حکومت کے ظالمانہ اور تشدد امیز اقدامات پر بحرینی حکام کو بارہا خبردار کر چکی ہیں۔

بحرینی عوام فروری دو ہزار گیارہ سے اپنے ملک میں جمہوریت اور آزادی کے قیام کے لئے پُر امن جد وجہد کر رہے ہیں۔

ٹیگز

متعلقہ مضامین

Back to top button
Close